پائیدار قیام امن کیلئے فلسطینی عوام کے مکمل حقوق کی فراہمی لازمی ہے

تہران، ارنا- ایرانی عدلیہ کے سربراہ نے عالمی یوم القدس کی مناسبت سے اپنے اسلامی ممالک کے ہم منصبوں کے نام میں ایک پیغام میں فلسطینی عوام کے مکمل حقوق کی فراہمی کو پائیدار قیام امن اور استحکام کیلئے ضروری قرار دے دیا۔

انہوں نے اس عرم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران فلسطینی عوام کے حقوق کی فراہمی سمیت ناجائز صہیونی ریاست کے جرائم اور مقبوضہ فلسطین پر جارحانہ اقدمات کو بین الاقوامی عدالتوں میں اٹھایا جانے کے حوالے سے اسلامی ممالک سے تعاون پر تیار ہے۔

ان خیالات کا اظہار علامہ سید ابراہیم رئیسی نے عالمی یوم القدس کی مناسبت سے اسلامی ممالک کے عدلیہ کے سربراہوں کے نام میں ایک پیغام میں کیا۔

اس پغام میں سات دہائیوں کے دوران، ناجائز صہیونی ریاست کے فلسطین پر قبضے کے تسلسل کیلئے امریکہ اور بعض یورپی ممالک کی کوششوں کا ذکر کیا۔

انہوں نے فلسطینی عوام کیجانب سے اپنے ہی مستقبل کا فیصلہ کرنے کے حق پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ ہرکسی ملک کا ناقابل انکار حق ہے۔

ایرانی عدلیہ کے سربراہ نے عالمی یوم القدس کو بیت المقدس کو ہمیشہ کیلئے فلسطین کا درالحکومت ہونے کا ثبوت قرار دے دیا۔

انہوں نے اپنے اس پیغام میں فلسطینی عوام کے مکمل حقوق کی فراہمی کو پائیدار قیام امن اور استحکام کیلئے ضروری قرار دیتے ہوئے اس عرم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران فلسطینی عوام کے حقوق کی فراہمی سمیت ناجائز صہیونی ریاست کے جرائم اور مقبوضہ فلسطین پر جارحانہ اقدمات کو بین الاقوامی عدالتوں میں اٹھایا جانے کے حوالے سے اسلامی ممالک سے تعاون پر تیار ہے۔

علامہ رئیسی نے اس حوالے سے قرآن پاک کے اس آیت کا ذکر کیا جس میں کہا گیا ہے: بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِیمِ ،‌«الَّذِینَ أُخْرِجُوا مِنْ دِیَارِهِمْ بِغَیْرِ حَقٍّ إِلَّا أَنْ یَقُولُوا رَبُّنَا اللَّهُ وَ لَوْلَا دَفْعُ اللَّهِ النَّاسَ بَعْضَهُمْ بِبَعْضٍ لَهُدِّمَتْ صَوَامِعُ وَبِیَعٌ وَصَلَوَاتٌ وَ مَسَاجِدُ یُذْکَرُ فِیهَا اسْمُ اللَّهِ کَثِیرًا وَلَیَنْصُرَنَّ اللَّهُ مَنْ یَنْصُرُهُ إِنَّ اللَّهَ لَقَوِیٌّ عَزِیزٌ» (سوره حج آیه۴۰)

واضح رہے کہ  ایران میں عالمی یوم القدس کے منصوبوں کا نقطہ عروج قائد اسلامی انقلاب حضرت آیت اللہ خامنہ ای کی اہم اور تاریخی تقریر ہے جس میں وہ القدس اور فلسطین سمیت علاقے اور دنیا میں حالیہ تبدیلیوں پر بات کریں گے اور اس کے بعد مزاحمت کی تاریخ میں نئے ڈائیلاگ کا اہم موڑ بن کر سامنے آئے گا۔

ایرانی سپریم لیڈر جمعہ کے روز مطابق عالمی یوم القدس میں مقامی وقت کے مطابق دو پہرکے 12 بجے میں دنیا بالخصوص دنیائے اسلام کے عوام سے تقریر کریں گے؛ اس تقریر لائیو طور پر براہ راست ٹیلی ویژن اور ریڈیو پر نشر کی جائے گی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 5 =