ڈیل آف سنچری صرف ناجائز صہیونی ریاست کو با اختیار بنانے کیلئے ڈیزائن کیا گیا ہے: پاکستان

اسلام آباد، ارنا - ایران میں سابق پاکستانی سفیر نے یوم القدس کے موقع پر فلسطینیوں کے خلاف ناانصافیوں کے خاتمے پر زور دیا ہے کہ نام نہاد ڈیل آف سنچری کا مقصد ناجائز صہیونی ریاست کو با اختیار بنانا اور ان کے قبضہ بڑھانا ہے۔

یہ بات "آصف علی خان درانی" نے منگل کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ صدی کا معاہدہ صیہونیوں کو فلسطینی علاقوں پر قبضہ بڑھانے کے لئے سرگردانی کے سوا کچھ بھی نہیں ہے۔
آصف علی خان درانی نے اس بات پر زور دیا کہ فلسطین سمیت دنیا کے ہر حصے میں ناانصافی کا خاتمہ ہونا چاہئے اور مسئلہ فلسطین کا واحد باضابطہ حل دو ریاستوں کے قیام کے حل کی تکمیل ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ فلسطین میں قابض صہیونی اپنے مطالبات کو برقرار رکھنے کی کوشش کر رہی ہیں اور وہ ڈیل آف سنچری جو توسیع پسندی کا مکمل منصوبہ ہے، میں پہلے سے کہیں زیادہ طاقت کا مظاہرہ کررہی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ فلسطینی علاقوں پر غیرقانونی قبضہ اور دنیا بھر میں سمیت کشمیر میں ہونے والی ناانصافیوں کا خاتمہ ہونا چاہئے۔
سابق پاکستانی سفیر نے کہا کہ القدس کی آزادی کے لئے عملی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے لیکن اسلامی دنیا میں اتحاد کے بغیر یہ ممکن نہیں ہے، بدقسمتی سے مسلم دنیا میں کوئی اتحاد نہیں ہے لہذا مسلمانوں کو امت اسلامی کے استحکام اور خوشحالی کے لئے متحد ہونا ہوگا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 2 =