افغانستان کے تمام ڈھروں کے درمیان یکجہتی کی حمایت کرتے ہیں: ظریف

تہران، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ان کا ملک افغانستان کے تمام ڈھروں کے درمیان یکجہتی کی حمایت کرتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق، "محمد جواد ظریف" نے آج بروز اتوار کو افغان صدر"اشرف غنی" اور افغان قومی مفاہمتی کونسل کے سربراہ "عبداللہ عبداللہ" سے الگ الگ ٹیلی فونک رابطوں کے دوران، ان کے درمیان سیاسی ڈیل طے پانے کا خیر مقدم کرتے ہوئے افغانستان میں قومی مفاہمتی کے عمل میں پیشرفت کی حمایت کی۔

انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ اسلامی جمہوریہ ایران افغانستان کے تمام سیاسی ڈھروں کے درمیان یکجہتی اور اتحاد کی حمایت کرتا ہے۔

 اس سے پہلی ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان سید "عباس موسوی" نے بھی اس سیاسی ڈیل طے ہونے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران افغان امن عمل میں ترقی اور افغانستان کے تمام گروہوں بشمول طالبان کے درمیان یکجہتی کی حمایت کرتا ہے۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ افغان صدر اشرف غنی اور ان کے حریف عبد اللہ عبداللہ کے درمیان سیاسی ڈیل طے پاگئی جس کی کاپی افغان میڈیا نے جاری کردی۔

افغان خبر رساں ادارے پر جاری دستاویزات کے مطابق عبد اللہ عبداللہ قومی مفاہمتی کونسل کے سربراہ ہوں گے جو صدارت کے بعد دوسرا بڑا سیاسی عہدہ تصور ہوگا۔

قومی مفاہمتی کونسل طالبان کے ساتھ مذاکرات کرنے والی ٹیم کی رہنمائی کرے گی جبکہ افغان کابینہ میں عبداللہ عبداللہ اور اشرف غنی دونوں پچاس فیصد کے حصہ دار ہوں گے۔ 

یاد رہے کہ عبداللہ عبد اللہ نے انتخابات میں دھاندلی کا الزام لگا کر متوازی حکومت تشکیل دینے کا اعلان کیا تھا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 1 =