صوبے گیلان کے عالمی ورثے کے الواح کی نقاب کشائی کی گئی

رشت، ارنا- ایرانی شمالی صوبے گیلان کے عالمی ورثے بشمول ہیرکانی جنگلوں، قاسم آباد گاؤں جس میں رات کے خیمے بُنے جاتے ہیں، کی ثقافتی ورثے اور عجائب گھروں کے ہفتے کی آمد کی مناسبت سے نقاب کشائی کی گئی۔

صوبے گیلان کے ادارہ برائے ثقافتی ورثے، دستکاری صنعت اور سیاحت کے سربراہ "مسعود حلاج پور" نے اس الواح کی رونمائی تقریب کے موقع پر ارنا نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے کہ حالیہ دنوں میں گیلان کے دو ثقافتی ورثوں کو عالمی ثقافتی ورثے میں رجسٹر کیا گیا ہے اور ان کے تحفظ کی ایک وجہ یہ ہے کہ وہ آنے والے نسلوں کیلئے باقی رہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ صوبے گیلان کے علاقے رودسر میں واقع  قاسم آباد گاؤں کو دستکاری مصنوعات کی عالمی کونسل کیجانب سے عالمی ثقافتی ورثے میں رجسٹر کیا گیا ہے جہاں رات کے خیمے بُنے جاتے ہیں۔

اس کے علاوہ ہیرکانی جنگل جن کا زیادہ تر حصہ صوبے گیلان میں واقع  ہے کو گزشتہ سال کے دوران آذربائیجان کے دارالحکومت باکو میں منعقدہ عالمی ثقاتی تنظیم یونیسکو کے 40 ویں اجلاس میں عالمی ثقافتی ورثوں میں رجسٹرد کیا گیا۔

ہیرکانی جنگلات کے تین مقامات بشمول تالش، گشت رودخان اور سیاہ رود، صوبے گیلان میں واقع ہیں؛ ان علاقوں کو محفوظ علاقوں کے طور پر سمجھا جاتا ہے اور ان میں کسی قسم کی انسانی مداخلت نہیں کی جائے گی اور صوبے گیلان کے قدرتی دلچسبیوں میں سے چند ہیں۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ 17 مئی کو ثقافتی ورثے اور عجائب گھروں کا عالمی دن ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 12 =