اسکوپس ڈیٹا بیس میں فردوسی یونیورسٹی کے ایک جریدے کا قبول کیا گیا

مشہد، ارنا- ایرانی شہر مشہد میں واقع فردوسی یونیورسٹی کی فیکلٹی آف ریاضیاتی علوم کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایرانی جریدے برائے عددی تجزیہ اور اصلاح کو اسکوپس ڈیٹا بیس (scopus ) میں قبول کیا گیا تھا۔

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر "علیرضا سہیلی" نے ہفتے کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ فردوسی یونیورسٹی کی فیکلٹی آف ریاضیاتی علوم کے جریدہ برائے عددی تجزیہ اور اصلاح، جس کا لاطینی نام "Iranian Journal of Numerical Analysis and Optimization" ہے، کو اسکوپس ڈیٹا بیس کو انڈیکس کرنے کیلے اسکوپس ایویلیویشن ٹیم نے حال ہی میں منظوری دے دی ہے جس کے پاس 60 ملین سے زیادہ دستاویزات ہیں۔

سہیلی نے کہا کہ ان بین الاقوامی ڈیٹا بیس جیسے اسکوپس میں ترتیب دیئے گئے مضامین اور جرائد کا مواد دوسرے محققین اور سائنسدانوں کو دستیاب کیا جائے گا جو ان ڈیٹا بیس کا دورہ کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس مواد کے بارے میں دوسرے لوگوں کے حوالوں کی تعداد جتنی زیادہ ہوگی اتنا ہی امکان ہے کہ جریدہ اور اس کے مضامین کو قبول کرلیا جائے۔

اس سائنسی جریدے کے ایڈیٹر نے کہا کہ یہ جریدہ جو ریاضی سائنسز ریسرچ کے جرنل کے نام سے سنہ 2008ء سے چلا رہا ہے، وزارت اسلامی ہدایت نامہ نے لائسنس حاصل کیا ہے اور 2013ء میں سائنس اور ٹیکنالوجی وزرات کی ہداست سے "Iranian Journal of Numerical Analysis and Optimization" کے نام تحت اپنی سرگرمیوں کا سلسلہ جاری رکھا گیا ہے۔

واضح رہے کہ اسکوپس Scopus، اور آئی ایس آئی ( ISI ) دو ڈیٹا بیس ہیں جو عالمی سطح پر تقریباً تمام علوم سے متعلق شائع شدہ علمی و تحقیقی مجلات کی درجہ بندی کرتے ہیں۔ یہ دونوں ڈیٹا بیس، بالترتیب دو کمپنیوں Elsevier اور Clarivate Analytics کی طرف سے چلائے اور منظم کیے جاتے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =