جوہری معاہدے سے یورپ کی حمایت کو عملی جامہ پہنانا ہوگا: ایرانی سفیر

 تہران، ارنا-  کروشیا میں تعنیات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے اس ملک میں تعینات دیگر غیر یورپی سفیروں سے ویڈیو کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ جوہری معاہدے اور کثیر الجہتی کی یورپی حمایت کو عملی جامہ پہنانا ہوگا۔

ان خیالات کا اظہار "پرویز اسماعیلی" نے آج بروز پیر کو 90 منٹس کے دورانیہ پر مشتمل ویڈیو کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ جیسا کہ یورپی یونین کے بانیوں نے کہا تھا یہ یونین کثیرالجہتی کو مضبوط بنانے، مشترکہ مفادات کو فراہم کرنے اورعلاقائی اور بین الاقوامی تنازعات اور بحرانوں کے حل کیلئے تشکیل دی گئی تھی؛ ہماری دنیا میں آج کی صورتحال اس مقصد کی درستگی کی علامت ہے۔

انہوں نے کروشیا کی یورپی یونین کی صدرات کے عہدہ سنبھالنے کے دوران میں کروشین حکومت کا نعرہ "چیلنچز بھری دنیا میں مضبوط یورپ" پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران  اس نعرے کو حقیقت میں تبدیل کرنے کی بدستور حمایت کرتا ہے۔

اسماعیلی نے جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ جوہری معاہدے کے قیام  اور اس کی سیاسی حمایت میں یورپی یونین کا کردار مثبت تھا لیکن اب جوہری معاہدے سے ان کی حمایت کو عملی جامہ پہہنانا ہوگا جس کی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر 2231 بھی حمایت کرتا ہی۔

انہوں نے کہا کہ تب ہی یورپی یونین دنیا میں سفارت کاری، امن اور تعاون کیلئے قابل اعتماد مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔

ایرانی سفیر نے کہا کہ بین الاقوامی تعلقات میں یکطرفہ رویہ اپنانا صرف بحرانوں میں اضافہ کرتا ہے؛ بین الاقوامی معاہدوں میں اجتماعی فیصلے کا احترام کرنا ہوگا۔

اس موقع پر کروشین وزیر خارجہ "گردان گرلیچ" نے کہا کہ مشرق وسطی میں قیام امن اور سلامتی، کروشیا کیلئے انتہائی اہم ہے اور ہم  اس حوالے سے کسی بھی حکمت عملی کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میرا عقیدہ ہے کہ امن کا کوئی متبادل نہیں ہے؛ بین الاقوامی معاہدوں اور ایک دوسرے کا احترام کرنا ضروری ہے؛ ہمارا سب کا فرض پُرامن عمل کی تقویت ہے۔

انہوں نے کروشیا میں زلزلے کے حادثے اور ساتھ ہی کرونا وائرس کے پھیلاؤ پر تبصرہ کرتے ہوئے اس حوالے سے دیگر ممالک بالخصوص ایران کے تعاون کا شکریہ ادا کیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 9 =