افغان شہریوں کا حادثہ افغانستان کی سرزمین پر وقوع پذیر ہوا ہے: ایران

تہران، ارنا- ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ افغان شہریوں کا حادثہ افغانستان کی سرزمین پر وقوع پذیر ہوا ہے اور ایرانی سرحدی فورس نے ہماری سرزمین پر اس حوالے سے کسی بھی واقعے کی تردید کی ہے۔

ان خیالات کا اظہار "سید عباس موسوی" نے اتوار کے روز افغان ذرائع ابلاغ سے شائع ہونے والی خبر جس میں دعوی کیا گیا ہے کہ افغان شہری سرحدی دریا کو پار کرتے ہوئے اسلامی جمہوریہ ایران میں غیر قانونی طور پر داخلہ لینا چاہتے تھے؛ جن کو حادثے کا شکار ہوا ہے، کے رد عمل میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ حادثہ افغانستان کی سرزمین پر وقع پذیر ہوا ہے اور ایرانی سرحدی فورس نے اس حوالے سے ایرانی سرزمین پر کسی بھی واقعے کی تردید کی ہے۔

موسوی نے کہا کہ اس واقعے کی اہمیت اور ساتھ ہی افغانستان کی سرزمین پر حادثے کی وجوہات کے انکشاف کی وجہ سے افغان حکام کیساتھ بدستور رابطے میں ہیں۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ افغان محکمہ خارجہ کے قائم مقام نے کہا ہے کہ افغانستان کیجانب سے ایک وفد کو چن لیا گیا ہے تا کہ وہ افغان ذرائع ابلاغ کیجانب سے ایران میں مقیم کچھ افغان شہریوں کو مارنے اور ان کو ہریرود دریا کے مضافات میں ڈوبنے کے دعوی کا جائزہ لیں۔

واضح رہے کہ حالیہ دنوں میں ایک ویڈیو شائع ہوگیا ہے جس میں اس بات کا دعوی کیا گیا ہے بعض افراد، غیر قانونی طور پر اسلامی جمہوریہ ایران کی سرزمین پر داخلہ لینا چاہتے تھے لیکن ایرانی سرحدی فورسز نے ان کو گرفتار کرکے دریا میں ڈوب لیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
8 + 9 =