ایران کی عراق کو بدامنی سے دوچار کرنے کی کسی بھی کارروائی کی مذمت

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ نے داعش دہشتگرد گروپ کے ہاتھوں حشد الشعبی فورسز کی شہادت کی مذمت کرتے ہوئے بتایا کہ ہم عراق کو کو بدامنی سے دوچار کرنے کی کسی بھی کارروائی کو مسترد اور مذمت کرتے ہیں۔

یہ بات سید عباس موسوی نے آج بروز اتوار گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے عراق میں استحکام اور سلامتی کو برقرار رکھنے کیلیے اس ملک کی بھرپور کوششوں کی تعریف کی۔

موسوی نے کہا کہ ہم عراق کی سلامتی اور استحکام کو درہم برہم کرنے کی کسی طرح کارروائی کی مذمت کریں گے۔

انہوں نے عراق کی رضا کار فورس حشد الشعبی کے روزہ دار مجاہدوں کے قتل میں داعش کے وحشیانہ اور بزدلانہ اقدام کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے عراقی قوم اور حکومت کو تعزیت کا اظہار کیا۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ عراقی حکومت جلد از جہد بعض ممالک کی حمایت یافتہ گروپ داعش کی اس لعنت کی باقیات سے نجات دلائے گی۔

ایرانی ترجمان نے کہا کہ تاریخ سے پتہ چلتا ہے کہ مجاہدین کا خون کبھی بھی ضائع نہیں ہوگا اور ان کے خون جو اسلام، عدل و حقیقت کی ترقی کا باعث ہے، کا بدلہ لیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز عراقی صوبے صلاح الدین میں داعش دہشتگرد گروپ کی کچھ باقیات کے حملے کے نتیجے میں عراقی رضاکار فورسز کے 10 اہلکار شہید اور کچھ زخمی ہوگئے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@       

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 4 =