امریکہ وینزویلا میں روڑے اٹکانا چاہتا ہے

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے ایران وینزویلا کے تجارتی تعلقات کے بارے میں امریکی سفارت کار کے اس دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اس الزامات کیساتھ امریکہ اس ملک کی ریفائنریوں کی تعمیر نو کے لیے وینزویلا حکومت کے منصوبے میں روڑے اٹکانا چاہتا ہے۔

یہ بات سید عباس موسوی نے آج بروز جمعہ  کے روز امریکہ میں وینزویلا کے امور کے عہدیدار کے دعوے کے ردعمل پر کہی۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ میں وینزویلا کے امورکے عہدیدارکے بے بنیاد دعوے کو مسترد کرتے ہوئے بتایا کہ اس دعوے کا مقصد امریکہ کی طرف سے وینزویلا کی حکومت پر مزید دباؤ ڈالنا اور ایران اور وینزویلا کے مابین تجارتی تعلقات کو خراب کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی حکومت جو وینزویلا کی حکومت کے عوام کی مزاحمت کی وجہ سے اقتصادی پابندیوں ، فوجی دھمکیوں اور حالیہ میں عبوری کونسل کی تشکیل سمیت وینزویلا میں اپنی پالیسیاں نافذ کرنے میں ناکام رہی ہے ، اب اس ملک کی ریفائنریوں کی بحالی اور پٹرولیم مصنوعات بشمول پٹرول کی پیداوار جس وقت میں امریکی پابندیوں کے باعث کمی کا شکار ہے، کے لیے وینزویلا کے پروگرام کی راہ میں رکاوٹ دال رہی ہے۔

فرانسیسی نیوز ایجنسی کے مطابق امریکی سنیئر سفارتکار برائے امور وینزویلا الیوت آبرامز نے دعوی کیا ہے کہ وینزویلا کی حکومت سونے کے ساتھ اپنی تیل صنعت میں ایرانی خدمات کی ادائیگی کر رہی ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 5 =