30 اپریل، 2020 12:17 PM
Journalist ID: 2393
News Code: 83770622
0 Persons
امریکہ ایران جوہری معاہدے کا شریک نہیں ہے: تخت روانچی

نیویارک، ارنا – اقوام متحدہ میں ایران کے مستقل مندوب نے ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کے لیے امریکی وزیر خارجہ کی جدو جہد کے ردعمل پر کہا ہے کہ امریکہ کے پاس اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ وہ اب بھی ایران جوہری معاہدے میں شامل ہے۔

یہ بات مجید تخت روانچی نے آج بروز جمعرات ٹوئٹر میں لکھی۔

روانچی نے کہا کہ پومپیو نے دعوی کیا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کے تحت، امریکہ جوہری معاہدے کا ایک شراکت دار ہے ، جبکہ قرارداد 2231 میں جوہری معاہدے کے شراکت داروں کے نام آئے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ پومپیو جوہری معاہدے کی طرف اشارہ نہیں کرتا ہے کیونکہ ان کے باس 8 مئی 2018 میں جوہری معاہدے سے یکطرفہ علیحدگی کا اعلان کیا ہے۔

ایرانی مندوب نے کہا کہ اسی وجہ سے امریکہ کو جوہری معاہدے میں شامل ہونے کا کوئی قانونی جواز نہیں۔

مائک پومپیو نے ایرانی عوام کے خلاف امریکی حکومت کی معاشی، سیاسی اور فوجی دہشت گردی کی پالیسی کو غیر موثر دیکھ کر دہشتگردی 'فاؤنڈیشن برائے دفاع جمہوریت' کی بنیاد پر دعوی کیا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد 2231 کے فریم ورک میں میں امریکہ بدستور جوہری معاہدے کا شریک ہے اور غلطی سے سوچتا کہ سکتا ہے کہ انہوں نے ایران پر اپنے وعدوں کی خلاف ورزی کا الزام لگائے اور سلامتی کونسل کی پابندیوں کی واپسی خصوصا ایران پر اسلحے کی پابندی میں توسیع کا مطالبہ کرے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha