اقوام متحده کی دستاویزات میں "خلیج فارس" کے پورے نام کو لکھنے کی ضرورت ہے: ایران

لندن، ارنا- برطانیہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر نے خلیج فارس کے قومی دن کی مناسبت سے اقوام متحدہ کے سکریٹریٹ سے ایک دستاویز جاری کی جس میں اس تنظیم کی دستاویزات، اشاعتوں اور بیانات میں "خلیج فارس" کے پورے نام کے استعمال کی ضرورت پر زور دیا گیا ہے۔

"حمید بعیدی نژاد" نے بدھ کے روز ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا ہے کہ 14 مئی 1999ء میں اقوام متحدہ کے سیکریٹریٹ میں جاری دستاویز کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران اور جزیرہ نما عربی کے درمیان آبی گذرگاہ کا نام "خلیج فارس" ہے اور اس تنظیم کی دستاویزات، اشاعتوں اور بیانات میں خلیج فارس کے پورے نام کا استعمال لازمی ہے۔ 

اقوام متحدہ نے 18 اگست 1994ء میں بھی ایک اور دستاویز میں" خلیج" کے بجائے خلیج فارس کے پورے لفظ کے استعمال کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

اس کے علاوہ ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان "عباس موسوی" نے بھی خلیج فارس کے قومی دن کی مناسبت سے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا ہے کہ خلیج فارس ہمیشہ کیلئے فارسی اور دوستی و امن کا سمندر رہے گا۔

 انہوں نے مزید کہا کہ خلیج فارس نعمتوں کا ایک منبع ہے جس نے رنگ، نسل اور زبان سے قطع نظر اپنی پڑوسیوں کو صدیوں سے فراخدلی کی میزبانی کررہا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ یہ بابرکت خلیج، پرانی تہدیب اور ثقافت کا مرکز ہے اور ہمیشہ کیلئے فارسی اور امن و دوستی کا سمندر باقی رہے گا۔

موسوی نے خلیج فارس کے قومی دن کے موقع پر سب کو مبارکبادی دی۔

واضح رہے کہ ایران میں 10 اردیبہشت مطابق 29 اپریل کو خلیج فارس کے قومی دن کا نام رکھا گیا ہے؛ یہ دن خلیج فارس اور آبنائے ہرمز سے پرتگالیوں کی واپسی کی سالگرہ ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha