خلیج فارس میں تنازعہ ٹرمپ کے مفاد میں نہیں ہوگا: سابق امریکی عہدیدار

نیویارک، ارنا – سابق امریکی سینیٹ کے مشیر نے کہا ہے کہ خلیج فارس میں ایران کیساتھ کسی بھی تنازعات ٹرمپ کے مفاد میں نہ ہوگا اور وہ اپنے اندرونی مسائل اور تیل کی گرتی ہوئی قیمتوں کو بیرون ملک میں فوجی مہم جوئی کیساتھ حل نہیں کر سکتا ہے۔

یہ بات جیمز جورج جترس نے آج بروز بدھ ارنا کے نمائندے کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔

انہوں نے کہا کہ خلیج فارس میں امریکی بحریہ کی فوجی موجودگی کے بارے میں کہا کہ خطرناک تناؤ کے پیش نظر تہران اور ٹرمپ کے درمیان ایک براہ راست رابطہ کارگر ثابت ہوسکتا تھا لیکن وائٹ ہاؤس کے جنگ پسندوں کی وجہ سے یہ ممکن نہیں ہوگا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ خلیج فارس میں ایران کے خلاف ہر طرح کے تنازعہ اور کشیدگی  نتیجہ ٹرمپ کے لئے مہنگا ہوگا۔

جترس نے تیل کی گرتی قیمتوں اور خلیج فارس میں ایرانی بحریہ کی فورسز کے خلاف امریکی بحری بیڑے کے اشتعال انگیز اقدامات کے درمیان رابطے کے بارے میں کہا کہ عالمی معیشت مردہ دماغ کا شکار ہو چکی ہے اور تیل کے لیے کوئی گاہک نہیں پایا جاتا ہے تو اسی بنیاد پر ایران کے ساتھ تیل کی قیمتوں کو متاثر کرنے کے لئے تنازعہ پیدا کرنا کوئی معنی نہیں رکھتا

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha