امریکہ کو ایران سے متعلق اپنے غیر تعمیری فیصلوں پر نظر ثانی کرنا ہوگا: روس

ماسکو، ارنا – ویانا میں بین الاقوامی تنظیموں میں تعینات روسی نمائندے نے کہا ہے کہ امریکہ کو ایران سے متعلق اپنے غیر تعمیری فیصلوں پر نظر ثانی کرنا ہوگا۔

یہ بات میخائیل اولیانوف نے منگل کے روز ٹویٹر میں اپنے ذاتی پیچ پر لکھی۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ کو ایران سے متعلق اپنے غیر تعمیری فیصلوں پر نظر ثانی کرے۔

اولیانوف نے "ایران پر زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالنے کی امریکی پالیسی کا اصل نتیجہ کیا نکلا ہے؟" کے سوال کے جواب میں کہا کہ امریکی اقدامات کا نتیجہ مشترکہ جامع ایکشن پلان (جے سی پی او اے) کے تحت ایرانی وعدوں کے کچھ حصوں کی جبری کمی تھا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ کیا اس کا وقت نہیں آیا ہے کہ امریکہ اپنے غیر تعمیری فیصلوں جن نے عالمی عدم پھیلاؤ اور علاقائی سلامتی کے نظام کو منفی طور پر متاثر کیا ہے، پر نظر ثانی کرے؟

قابل ذکر کہ ٹرمپ امریکہ دو سال قبل( 2018 کے مئی مہینے) مشترکہ جامع ایکشن پلان (جے سی پی او اے) سے جھوٹی وجوہات کی بناء پر(یکطرفہ) دستبردار ہوگیا جس کے بعد واشنگٹن نے ایران کے خلاف غیرقانونی پابندیاں عائد کردیں۔

ایرانی حکومت نے بھی امریکہ کے اس غیرقانونی اور ایک طرفہ اقدام کے جوابی ردعمل میں جوہری معاہدے کے تناطر میں اپنے کچھ وعدوں سے دستبردار ہونے کا فیصلہ کیا۔

تقریبا چار مہینے پہلے ، یورپی ترویکا (فرانس ، جرمنی اور برطانیہ) نے اپنی ذمہ داریوں پر مکمل عمل نہ کرنے کے ساتھ ایران کو اپنی ذمہ داریوں کے پوری طرح عمل کرنے پر مجبور کرنے کی کوشش کی جن ممالک نے ایران کے خلاف اقوام متحدہ کی پابندیوں کی واپسی کے لیے تنازعات کے حل کے میکنزم سے غلط استعمال کیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 6 =