24 اپریل، 2020 4:22 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83762956
0 Persons
یورپ اور امریکہ، ایران کا وعظ نہیں دے سکتے: ظریف

تہران، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ امریکہ اور یورپ، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر 2231 کی غلط تشریح کی بنا پر ایران کا وعظ نہیں دے سکتے۔

ان خیالات کا اظہار  ڈاکٹر "محمد جواد ظریف" نے آج بروز جمعہ کو ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ 2017ء سے اب تک اقوام متحدہ کی قرارداد 2231 کی خلاف وزری کرتے ہوئے سب کیخلاف جبر کر رہا ہے اور سب کو ہراسان بھی کر رہا ہے۔

انہوں نے جوہری معاہدے سے امریکی علیحدگی کے سامنے یورپ کیجانب سے کوئی اقدام نہ اٹھانے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یورپ نے قرارداد 2231 کی پیروی کرنے کے بجائے امریکہ کی پیروی کیا ہے۔

 ظریف نے اس بات پر وز دیا کہ ان میں سے کوئی بھی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر 2231 کی غلط تشریح کی بنا پر ایران کا وعظ نہیں دے سکتا۔

انہوں نے کہا کہ ایران کے پاس نہ جوہری ہتھیار ہے نہ ہی کوئی ایسا میزائل جو اس دہشتناک ہتھیاروں کا منتقل کر سکے، اب آپ خود اندارہ لگائیں کہ کس کے پاس ایسے ہتھیار ہیں؟

یہ بات قابل ذکر ہے کہ امریکہ اور یورپ کے بعض حکام نے حالیہ دنوں میں اس بات کا دعوی کیا ہے کہ ایران نے نور 1 فوجی سیٹلائٹ کو لانچ کرنے سے اقوام متحدہ کی قرارداد نمبر 2231 کی خلاف ورزی کی ہے۔

ظریف نے اپنے ٹوئٹر پیغام میں امریکی اخبار نیویارک ٹائمز مین چھپے ہوئے کچھ تصاویر اور دستاویزات کو بھی شائع کیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha