ایران کا عالمی ادارہ صحت سے پابندیوں کی منسوخی میں کردار ادا کرنے کا مطالبہ

تہران، ارنا- ایرانی وزیر صحت نے عالمی ادارہ صحت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ایران کیخلاف امریکی ظالمانہ پابندیوں کی منسوخی میں کردار ادا کرے۔

ان خیالات کا اظہار "سعید نمکی" نے بدھ کے روز عالمی ادارہ صحت کے سربراہ کیساتھ ویڈیو کانفرنس سے متعلق وضاحتیں پیش کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں پابندیوں کے دوران، کرونا وائرس کی بیماری کو کنٹرول کرنے کے اقدامات پر فخر ہے۔

نمکی نے کہا کہ انہوں نے مشرقی بحیرہ روم کے ممالک کے وزرائے صحت میں ویڈیو کانفرنس کے دوران، ایران میں کرونا وائرس کی صورتحال اور اس کی روک تھام کیلئے اٹھائے گئے اقدامات سے متعلق وضاحتیں پیش کی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پیش ہونے والی رپورٹ میں اعلان کیا گیا کہ پچھلے اجلاس کے 18 دنوں بعد ایران میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی روزانہ تعداد میں 53 فیصد اور ہلاکتوں کی تعداد میں بھی 30 فیصد کی کمی نظر آئی ہے۔

نمکی نے کہا کہ اس موقع پر عالمی ادارہ صحت کے سربراہ نے 70 ملین افراد کی اسکریننگ کیلئے ایرانی حکومت کے طرز عمل کو سراہا؛ کیونکہ یہ منصوبہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی کمی میں انتہایی موثر ثابت ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عالمی ادارہ صحت سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ صحت کے نگہداشت کے نظام اور بنیادی صحت کی دیکھ بھال اور صحت عامہ کی کوریج میں بنیادی ڈھانچے کی ترقی اور سرگرمیوں کو مربوط کرنے کیلئے خاص طور پر خطے کے ممالک میں موثر اقدامات کرے۔

نمکی نے کہا کہ کل ایک بہت بڑا آن لائن اجلاس کا انعقاد ہوگا جس میں دنیا کے تمام وزرائے صحت سمیت جینوا میں تعینات عالمی ادارہ صحت شریک ہوں گے اورعالمی ادارہ صحت کے ہر 6 علاقوں میں سے ایک کامیاب ملک کرونا وائرس کی روک تھام میں اپنے کیے گئے اقدامات کی رپورٹ دے گا؛ اس حوالے سے ایران مشرقی بحیرہ روم کے علاقے سے چن لیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ ایرانی محکمہ صحت کے مطابق اب تک مجموعی طور پر ملک کے اندر 85 ہزار 966 افراد کرونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں جن میں سے 5 ہزار 391 افراد کا انتقال ہوگئے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha