علاقائی امن کی فراہمی کا واحد راستہ خطی ممالک کے درمیان تعاون ہے: ایرانی صدر

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ممکلت نے ایران اور قطر کے دوستانہ اور بھائی چارے پر مبنی تعلقات پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا عقیدہ ہے کہ علاقے میں قیام امن کا واحد راستہ خطی ممالک کے درمیان تعاون ہے۔

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر "حسن روحانی" نے منگل کے روز امیر قطر "شیخ تمیم حمد آل ثانی" کیساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔
 اس موقع پر انہوں نے کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے تمام ممالک کے درمیان تعاون کے فروغ کو انتہائی اہم اور موثر قرار دے دیا۔

انہوں نے ایران میں کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے اٹھائے گئے اقدامات بشمول بیماروں کےعلاج سمیت اقتصادی، سرکاری اور تعلیمی سرگرمیوں پر عمل کرنے سے متعلق اپنائی گئی پالیسیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس حوالے سے اپنے تجربات کو تمام ممالک بالخصوص دوست بردار ملک قطر سے شیئر کرنے پر تیار ہیں۔

صدر روحانی نے کہا کہ ہمیں دونوں ممالک کے مابین تجارتی اور معاشی تعلقات کو صحت کے رہنما خطوط کی مکمل پابندی کیساتھ جاری رکھنے کی کوشش کرنی چاہیے اور مشترکہ تعاون کمیشن کے حکام کو بھی اس سلسلے میں کسی کوشش سے دریغ نہیں کرنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ ایران مخالف امریکی پابندیاں نہ صرف بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی ہیں بلکہ وہ ان پابندیوں کو سخت سے سخت بنانے اور اس مشکل صورتحال میں آئی ایم ایف سے قرضہ لینے کی ایرانی درخواست سے مخالفت کرنے کے ذریعے تمام انسانی اصولوں کو پاؤں تلے روندتے ہیں۔

صدر روحانی نے کہا کہ ہمارا عقیدہ ہے کہ کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے تمام ممالک کو ایک دوسرے کیساتھ کھڑے رہنے سمیت امریکی خصمانہ اقدامات کے سامنے واضح موقف اختیار کرنا ہوگا۔

ایرانی صدر نے سعودی عرب کے اتحاد کیجانب سے یمن پر حملوں، قتل عام اور تباہی کا سلسلہ جاری رکھنے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا وہ ابھی بھی اپنے غیر انسانی اقدامات سے دستبردار نہیں ہونا چاہتے ہیں؛ لیکن ہمیں اس میں کوئی شک نہیں ہے کہ انہیں جلد یا بدیر انہیں اپنا راستہ تبدیل کرنا پڑے گا۔

صدر روحانی نے کہا کہ ہمارا عقیدہ  ہے کہ علاقے میں قیام امن کا واحد راستہ خطی ممالک کے درمیان تعاون ہے۔

در این اثنا امیر قطر شیخ تمیم بن حمد آل ثانی نے ایرانی حکومت اور عوام اور تمام مسلمانوں کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ باہمی تعاون کے ذریعے اس عالمگیر وبا پر قابو پانا ہوگا۔

انہوں نے دونوں ملکوں کے درمیان تجارتی اور اقتصادی تعاون کی توسیع پر زور دیتے ہوئے دونوں ممالک کے حکام سے مطالبہ کیا کہ اس حوالے سے کسی بھی کوشش سے دریغ نہ کریں۔

امیر قطر نے ایران مخالف امریکی پابندیوں کو ظالمانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ آج دنیا ایک نازک صورتحال میں ہے اور اس وقت امریکہ کو چاہیے کہ ایران کیخلاف عائد پابندیوں کو اٹھائے۔

انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ علاقائی مسائل بدستور جاری ہیں اور ہمیں امید ہے کہ خطے کی صورتحال اس طرح جاری رہے کہ ہمیں شام اور یمن کی جنگوں میں جنگ بندی نظر آئے گی اور تعاون اور اجتماعی کوششوں سے ہم خطے کے مسائل کا حل کی تلاش کرسکیں گے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha