صوبے خراسان رضوی میں پانج غیر ملکی سرمایہ کاری کے منصوبوں کی منظوری دی گئی

مشہد، ارنا- ایرانی شمالی صوبے خراسان رضوی کے دائریکٹر جنرل برائے معاشی امور نے کہا ہے کہ رواں سال کے اپریل مہینے کے دوران، اس صوبے میں غیر ملکی سرمایہ کاری پر مبنی پانچ نئے منصوبوں کی منظوری دی گئی۔

ان خیالات کا اظہار "حسین امیر رحیمی" نےمنگل کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے رونما ہونے والی مشکل صورتحال کے باوجود، اپریل میہنے کے دوران، اس صوبے میں 20 ملین ڈالر کی غیر ملکی سرمایہ کاری پر مبنی پانچ نئے منصوبوں کی منظوری دی گئی۔

امیر رحیمی نے کہا کہ یہ منصوبے تجارت، رہائش، لباس، گرین ہاؤسز اور بین الاقوامی نقل و حمل کے شعبوں میں ہیں جن پر عمل درآمد بھارت اور افغانستان کے سرمایہ کار کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایک بھارتی سرمایہ کار نے گذشتہ مہینے کے دوران، ایک تجارتی- رہائشی منصوبے میں 16 ملین 800 ہزار ڈالر کی سرمایہ کاری کیساتھ اس صوبے میں سب سے زیادہ سرمایہ کاری کی ہے۔

واضح رہے کہ صوبے خرسان رضوی کو سب سے زیادہ ترغیر ملکی سرمایہ کاری کے لحاظ سے ملک کی پہلی پوزیشن اور سرمایہ کاری کی بھاؤ کے لحاظ سے بھی چوتھی پوزیشن حاصل ہے۔

"خراسان رضوی میں سرمایہ کاری کے مواقع" کے عنوان کے تحت ایک کتاب جس میں سرمایہ کاری کے 100 مواقع متعارف کروائے گئے ہیں، کو سرمایہ کاری سروسز سنٹر کے ذریعہ الیکٹرانک اور کاغذی شکل میں دو زبانوں میں تیار کیا گیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha