علاقے میں قیام امن کیلئے خطی ممالک کے درمیان تعاون ناگزیر ہے: ایرانی صدر

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ممکلت نے اس بات پر زور دیا ہے کہ علاقے میں قیام امن کیلئے خطی ممالک کے درمیان دوستی اور تعاون ناگزیر ہے۔

انہوں نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے دنیا میں رونما ہونے والے سخت بحران پر تبصرہ کرتے ہوئے اس امید کا اظہار کردیا کہ اس مشکل صورتحال، بعض ملکوں کو اپنی غلطیوں پر نظر ثانی کرنے اور انسانی تعلقات پر مبنی اقدامات اٹھانے میں ڈرا دے گی۔

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر حسن روحانی نے پیر کے روز امیر کویت کیساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران کیا۔

اس موقع پر انہوں نے کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے خطی ممالک کے درمیان تعاون پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم نے اس حوالے سے اچھے تجربات کیے ہیں اور ان تجربات کو دوست ممالک بالخصوص کویت سے شئیر کرنے پر تیار ہیں۔

انہوں نے خطے میں استحکام لانے کیلئے امیر کویت کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ علاقے میں قیام امن کیلئے خطی ممالک کے درمیان تعاون اور دوستی ناگزیر ہے۔

ایرانی صدر نے دنیا اور خطے میں قیام امن و استحکام لانے سمیت کوویڈ- 19 کی روک تھام میں باہمی تعاون کیلئے آمادگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دوست ملک کویت سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ علاقائی مسائل سمیت امریکی نامناسب سلوک کے سامنے موقف اختیار کرے۔

انہوں نے دونوں ملکوں کے تعلقات کو دوستانہ اور بھائی چارے پر مبنی قرار دیتے ہوئے ان تعلقات کی توسیع پر دلچسبی کا اظہار کردیا۔

صدر روحانی نے رمضان الکریم کی آمد پر کویتی حکومت اور عوام کو مبارکباد دی۔

اس موقع پر امیر کویت "شیخ صباح الاحمد جابر الصباح" نے اس مشکل صورتحال میں دوست ملکوں کے درمیان تعاون اور دوستی کی تقویت پر زور دیا۔

انہوں نے خطے میں قیام امن سے متعلق ایرانی پیش کردہ ہرمز امن منصوبے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ کویت نے ہمیشہ امن پسند موقف اپنایا ہے اور ہمیں امید ہے کہ علاقے میں ہمارے دیگر دوست اور برادر ملک بھی قابل قبول موقف اپنائیں۔

امیر کویت نے علاقائی اور بین الاقوامی مسائل کے سامنے ایرانی تعمیری مواقف کو سراہتے ہوئے کوویڈ- 19 کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے ایرانی تجربات سے فائدہ اٹھانے کا خیر مقدم کیا اور تمام شعبوں میں باہمی تعلقات کی توسیع پر زور دیا۔

شیخ صباح الاحمد جابر الصباح نے رمضان الکریم کی آمد پر ایرانی حکومت اور عوام کو مبارکباد دی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha