ایرانی صنعت، کان کنی اور تجارت کے شعبے میں 854 ملین ڈالر غیرملکی سرمایہ کاری

تہران، ارنا - ایران میں غیر ملکی سرمایہ کاری سے متعلق رپورٹ کے مطابق، سال 1398 کے آغاز سے لے کر مارچ کے آخر تک ، صنعت ، کان کنی اور تجارتی شعبوں میں 854 ملین ڈالر غیر ملکی سرمایہ کاری کے ساتھ 82 منصوبوں اور یونٹس کی منظوری دی گئی۔

82 رجسٹرڈ کمپنیوں میں 33 کمپنیاں سو فیصد غیر ملکی شیئر ہولڈرز کے ساتھ  اور 48 کمپنیاں گھریلو شراکت دار (جوائنٹ وینچر) اور ایک کیس معاہدے کا انتظام  کے شامل ہیں۔
اعدادوشمار پر ایک نظر ڈالیں تو پتہ چلتا ہے کہ حجم کے لحاظ سے ، صنعت کا حصہ 98 فیصد ، کان کنی کا حصہ 12 فیصد اور تجارت کا حصہ 1.88 فیصد ہے۔
پانچ ممالک متحدہ عرب امارات ، نیدرلینڈز ، چین ، ترکی اور جرمنی نے پانچ صوبوں زنجان ، خراسان رضوی ، کرمانشاہ ، ہرمزگان اور تہران میں حجم کے لحاظ سے سب سے بڑی سرمایہ کاری کی ہیں۔
رپورٹ کے مطابق ، اس عرصے کے دوران غیر ملکی سرمایہ کاری کا سب سے زیادہ حجم "تمباکو کی مصنوعات" ، "کھانے پینے کی اشیاء" ، "دیگر غیر دھاتی معدنی مصنوعات" ، "کیمیائی مینوفیکچرنگ"، "فریکلز اور پٹرولیم مصنوعات" کے پانچ گروہوں میں شامل تھا۔
اعدادوشمار کے مطابق، افغانستان کی طرف سے زیادہ تر سرمایہ کاری (14 منصوبوں / یورٹس کے ساتھ) ظاہر کی گئی ہے اور دوسرے نمبر پر ترکی ( 13  منصوبوں / یونٹوں کے ساتھ) تیسرے نمبر پر چین ( 11 منصوبوں / یونٹوں کے ساتھ ) ، چھوتے نمبر پر متحدہ عرب امارات اور آسٹریا  (6 منصوبوں کے ساتھ)، پانچوین نمبر پر عراق اور بھارت (پانچ منصوبوں کے ساتھ) کی سرمایہ کاری کا زیادہ حصہ ظاہر کرتا ہے۔
صوبے خراسان رضوی میں (20 منصوبوں / یونٹس کے ساتھ) غیر ملکی سرمایہ کاروں کا زیادہ حصہ دکھایا جاتا ہے۔ صوبے تہران ( 11 منصوبوں / یونٹس کے ساتھ ) دوسرے نمبر، صوبے قزوین ، مشرقی آذربائیجان اور خوزستان تیسرے مقام پر ہیں جن میں پانچ منصوبے / یونٹ ہیں۔
اس مدت کے دوران غیر ملکی سرمایہ کے حجم کے 54 فیصد صوبے زنجان ، خراسان رضوی ، کرمانشاہ اور ہرمزگان میں کیا گیا ہے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha