ایران میں مویشیوں کی آبادی میں ایک کروڑ اضافے کی پیش گوئی 

اہواز، ارنا- ایران کی لائیو اسٹاک سپلائی کونسل کے چیئرمین نے پیش گوئی کی ہے کہ موسم بہار کے اختتام تک ایرانی مویشیوں کی تعداد 650 لاکھ سے 750 لاکھ تک پہنچ جائے گی۔

ان خیالات کا اظہار "منصور پوریان" نے بدھ کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ آبی سال میں مناسب بارش اور موسم کے سازگار حالات کی وجہ سے ملک کے ہلکے مویشیوں میں اضافہ ایک نیا ریکارڈ ہے۔
پوریان نے کہا کہ اگر مناسب منصوبہ بندی کی جائے تو ملک میں ہلکے مویشیوں (بھیڑوں اور بکریوں) کی شرح پیدائش میں اضافے کیساتھ سرخ گوشت کی قیمت میں توازن برقرار ہوجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں سرخ گوشت کی قیمت اب بھی اونچی ہے جس میں صرف ثالثوں اور گوشت کی پیکنگ اور پروسیسنگ یونٹوں کا فائدہ ہے۔

پوریان نے کہا کہ قصائیوں میں مٹن کی قیمت، پیداوار اور دیکھ بھال کے اخراجات کی وجہ سے 700 ریال سے زیادہ نہیں ہونی چاہئے، لیکن فی الحال ایسا نہیں ہے جو دونوں ہی پروڈیوسر اور صارفین پر بُرے اثرات مرتب کرتا ہے۔

بھاری مویشیوں کی تعداد میں 20 لاکھ کا اضافہ

لائیو اسٹاک سپلائی کونسل کے چیئرمین نے کہا کہ موسم بہار کے اختتام تک بھاری مویشیوں (گائے اور بچھڑا) کی تعداد 5۔9 ملین سے 5۔11 ملین تک پہنچ جائے گی اور بھینسوں کی تعداد بھی 220 ہزار سے 370 ہزار تک پہنچ جائے گی جو اس شعبے میں ایک نیا ریکارڈ ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہلکے اور بھاری مویشوں کی تعداد اندرونی مارکیٹ کی مانگ سے زیادہ ہے اور اس شعبے پر نقصان نہ پہنچنے کیلئے ان کو برآمدات کرنے کی ضرورت ہے لیکن اب کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے ان کی برآمدات ممکن نہیں ہے۔

مویشیوں کی 3۔1 ملین کی تعداد مارکیٹ کی مانگ سے زیادہ ہے

پوریان نے کہا ہے کہ اب 10 لاکھ ہلکے مویشیوں اور 300 ہزار بھاری مویشیوں کی تعداد مارکیٹ کے تقاضے سے زیادہ ہے اور موسم بہار کے اختتام تک اس میں مزید اضافہ ہوجائے گا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha