کرونا وائرس کے علاج کی خدمات؛ یورپ میں 150 یورو، امریکہ میں 200 ڈالر اور ایران میں مفت

تہران، ارنا- ایرانی ادارہ صحت کے سربراہ نے کہا ہے کہ کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کو علاج کے خدمات کی فراہمی پر یورپی ممالک میں 150 یورو اور امریکہ میں 200 ڈالر کی رقم کا ادا کرنا پڑتا ہے حالانکہ اسلامی جمہوریہ ایران نے معاشی دباؤ اور پابندیوں کے باوجود ان سب خدمات کی مفت فراہمی کی ہے۔

ان خیالات کا اظہار "جعفر صادق تبریزی" نے پیر کے روز ایرانی گاؤں کے علاقوں اور خانہ بدوشوں کے درمیان کرونا وائرس کی روک تھام سے متعلق منعقدہ ایک نشست کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایرانی محکمہ صحت نے اس سلسلے میں رضاکار قومی مہم کی صورت میں اپنے اقدمات کا آغاز کیا ہے اور اس حوالے سے 6 بنیادی اقدامات اٹھائے گئے ہیں۔

تبریزی نے کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کے مراکز کے قیام اور ٹیلی فونک طور پر تمام گھرانوں کی اسکریننگ کو اسی قومی مہم کے اقدامات میں سے چند قرار دے دیا۔

انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے گاؤں کے علاقوں اور خانہ بدوشوں کے درمیان بڑے پیمانے پر ٹیلی فونک طور پر مشاورت اور حفاظتی تدابیر کی رہنمایی کی فراہمی کی گئی۔

تبریزی نے کہا کہ اب تک کرونا وائرس سے متعلق 7 کروڑ افراد کی اسکریننگ کی گئی ہے اور ان میں سے 25 ہزار افراد کو خدمات کی فراہمی کیلئے متعلقہ اداروں میں بھیجا گیا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ اایرانی محکمہ صحت کے مطابق اب تک مجموعی طور پر ملک کے اندر 73 ہزار 303 افراد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے4585 افراد کا انتقال ہوگئے اور 45 ہزار 983 افراد بھی صحت یاب ہوکر ہسپتال سے رخصت لے کر گھر چلے گئے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha