ظریف اور گوٹرش کا پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران دوسرا ٹیلی فونک رابطہ

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ اور اقوام متحدہ کے سربراہ نے ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران یمن میں جنگ بندی سے متعلق کیے گئے اقدامات پر تبادلہ خیال کیا۔

تفصیلات کے مطابق انٹونیو گوٹرش نے اتوار کی رات "محمد جواد ظریف" سے ایک ٹیلی فونک رابطے کے دوران، یمن میں جنگ بندی کا سلسلہ جاری رکھنے کیلئے اقوام متحدہ کیجانب سے اٹھائے گئے اقدامات اور کوششوں کی رپورٹ کو پیش کیا۔

اس موقع پر ایرانی وزیر خارجہ نے یمن میں جنگ بندی کا تسلسل جاری رکھنے کیلئے اقوام متحدہ کی کوششوں کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ یمنی بحران کا کوئی فوجی حل نہیں ہے۔

انہوں نے پائیدار جنگ بندی کو یمنی بحران کے سیاسی حل کا پیش خیمہ قرار دے دیا۔

ظریف نے افغانستان کے سیاسی بحران کے حل اور افغان امن عمل کی پیشرفت میں ایرانی سفارتی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے حالیہ دونوں میں "اشرف غنی" اور "حنیف اتمر" سے اپنے ٹیلی فونک رابطوں کی تفصیلات کی وضاحت کی۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی وزیر خارجہ اور سربراہ اقوام متحدہ نے گزشتہ رات بھی یمن کی تازہ ترین صورتحال اور ایران مخالف امریکی غیر قانونی پابندیوں سے متعلق بات چیت کی تھی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha