پٹرول پیداوار میں ایرانی صلاحیت نے اس کیخلاف پابندیاں لگانے کو ناممکن بنا دیا

تہران، ارنا- سنیئر نائب ایرانی صدر نے جنوبی صوبے بندرعباس میں "ستارہ خلیج فارس" ریفائری کے قیام کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اگر ہم اس پروجیکٹ پر سنجیدگی سے توجہ نہیں دیتے تو امریکہ ایرانی پٹرول کیخلاف پابندیاں لگایا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ لیکن امریکیوں نے دیکھا ہے کہ ہم نہ صرف ملک میں پٹرول کی ضرویات کو فراہم کرسکتے ہیں بلکہ ہم دوسرے ممالک کو بھی پٹرول اور ڈیزل برآمد کررہے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر"اسحاق جہانگیری" نے اتوار کے روز ایران کے نئے وزیر زارعت کے تعارف کی تقریب کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر انہوں نے ملک میں موجودہ چلینچز بشمول ایران مخالف امریکی پابندیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ نے ایران کیخلاف دباؤ ڈالنے کی پوری کوشش کی اور اس حوالے سے اپنی تمام صلاحیتوں کو بروئے کار لائی۔

جہانگیری نے کہا کہ واشنگٹن نے ایرانی بینکوں کیخلاف پابندیاں لگاتے ہوئے ہمارے مالی وسائل کو منجمد کیا ہے اور اب وہ ہم کو مدد کرنے کا دعوی دیتے ہیں۔

ایران مخالف امریکی پابندیوں میں ضروری مصنوعات بھی شامل ہیں

نائب ایرانی صدر نے کہا کہ امریکیوں کے دعووں کے برعکس انہوں نے ایرانی ضروری مصنوعات پر بھی پابندیاں لگائی گئی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اگر ان کے پابندیوں کے مطابق بعض بنیادی مصنوعات جیسے گندم کو خریدنے میں کوئی رکاوٹ نہیں ہے لیکن گندم اور دیگر ضروری مصنوعات کو خریدنے کیلئے ہمیں رقوم کی منتقلی کی ضرورت ہے اور پابندیوں کی وجہ سے کسی بینکی خدمات اور مالی دین دین کا امکان نہیں ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha