ایرانی ٹیچر نے عالمی مقابلوں میں جیتے گئے تمغے کو نرسوں کا عطیہ کیا

تہران، ارنا-  ایرانی علاقے محلات سے تعلق رکھنے والےٹیچر نے کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے طبی ٹیموں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے عالمی والی بال مقابلوں میں اپنے جیتے گئے سونے کے تمغے کو نرسوں کا عطیہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق ایرانی صوبے مرکزی کے علاقے محلات سے تعلق رکھنے والے ٹیچر"حسن محمدی" جنہوں نے برازیل میں منعقدہ عالمی سیٹنگ والی بال یمقابلوں ایک سونے کا تمغہ حاصل کیا ہے، کرونا وائرس کیخلاف نرسوں اور طبی ٹیموں کی کوششوں کا شکریہ ادا کرنے کیلئے اپنے تغمے کو محلات میں واقع امام خیمنی (رح) ہسپتال میں سرگرم نرسوں کا عطیہ کیا۔

محمدی پیرا المپیک مقابلوں میں حصہ لینے والے کھیلاڑی اور ساتھ ہی سیٹنگ والی بال کے کوچ بھی ہیں۔

انہوں نے مشہد میں آستان مقدرس رضوی کے مجسمے کو بھی محلات میں سرگرم طبی ٹیموں اور نرسوں کا عطیہ کردیا۔

محمدی نے اپنے سونے کے تمغے کو عطیہ کرنے کے موقع پر کہا کہ حالیہ صورتحال میں اس سونے کا میرے گھر میں کوئی جگہ نہیں ہے کیونکہ کل تک میں نے سوچا کہ میں ہیرو ہوں حالانکہ اب مجھے پتہ چلا کہ واقعی ہیرو وہ ہیں جو ابھی کرونا وائرس کیخلاف فرنٹ لائن میں لڑ رہے ہیں۔

واضح ہے کہ ایرانی محکمہ صحت کے شعبہ تعلقات عامہ کے سربراہ کیانوش جہانپور کے مطابق اب تک مجموعی طور پر ملک میں 70 ہزار 29 افراد کرونا وائرس سے متاثر ہوچکے ہیں جن میں سے 4 ہزار 357 افراد کا انتقال ہوگئے ہیں اور 41 ہزار 947 افراد بھی صحت یاب ہوکر ہسپتال سے رخصت لے کر گھر چلے گئے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha