کوویڈ-19 کی روک تھام کیلئے ایران کیخلاف پابندیوں کو اٹھانا ہوگا: پاکستان

اسلام آباد، ارنا- پاکستانی عوامی تحریک کی خاتون ترجمان نے اس بات پر زور دیا کہ کرونا وائرس کی روک تھام اور انسانی و معاشی تباہی سے نمٹنے کیلئے ایران مخالف امریکی پایندیوں کو اٹھانا ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے بین الاقوامی دباؤ کے باوجود ابھی ایران کیخلاف لگائی گئی پابندیوں کی منسوخ نہیں کی ہے۔

ان خیالات کا اظہار "نفیسہ شاہ" نے بدھ کے روز ارنا نمائندے کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے اس امید کا اظہار کردیا کہ امریکہ اور یورپی یونین اس بات کو سمجھ لیں کہ انسانی اور معاشی تباہی سے نمٹنے کیلئے ایران مخالف پابندیوں کو اٹھانا ہوگا۔

نفیسہ شاہ نے کہا کہ اسی صورتحال میں کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے امریکی صحت کا نظام بھی بے بس ہوگیا اور پھر وہ توقع رکھتے ہیں کہ اسلامی جمہوریہ ایران، پابندیوں کے باوجود اور بغیر کسی بین الاقومی حمایت کے اس بحران پر قابو پالے۔

پاکستانی عوامی تحریک کی خاتون ترجمان نے کہا کہ اگر کرونا وائرس کے پھیلاؤ کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے تمام ممالک کے درمیان تعاون نہ ہوجائے تو پھر کیا ہوگا؟ یہ اس وقت ہے جب توقع کی جاتی تھی کہ کرونا وائرس کا پھیلاؤ، بین الاقوامی برداری کو نیند سے جگانے سمیت بڑے نقصانات سے بچنے کیلئے باہمی تعاون کا باعث ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایران کے خلاف امریکی پابندیوں کو ختم کرنے کیلئے لازمی طور پر کسی لابی کی ضرورت نہیں ہوتی ہے لیکن امریکہ، بین الاقوامی دباؤ کے باوجود ابھی بھی ایران کیخلاف پابندیوں کے نفاذ سے دستبردار نہیں ہوگیا ہے۔

نفیسہ شاہ نے عالمی برادری کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اب طاقت اور پالیسی کے کھیل کو ختم کرنے اور زندگی کو بچنے کا وقت ہے؛ اب دنیا کے کسی بھی کونے میں ہر کسی انسان کے جان کو بچنے کا وقت ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی محکمہ صحت کے مطابق اب تک مجموعی طور پر ملک میں 67 ہزار 286 افراد کوویڈ-19 کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے 3993 افراد کا انتقال ہوگئے ہیں اور ساتھ ہی 29 ہزار 817 افراد بھی صحت یاب ہوگئے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 11 =