گرین کوریڈور بنانے کیلئے روسی تجویز کا خیر مقدم کرتے ہیں: ظریف

تہران، ارنا- ایرانی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ ہم معاشی جنگ اور پانبدیوں کے بجائے گرین کوریڈور بنانے کیلئے روسی تجویز کا خیر مقدم کرتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ایران مخالف امریکی پابندیوں کی منسوخی کی عالمی خواست کو بدستور نظر انداز کر رہا ہے۔
ان خیالات کا اظہار "محمد جواد ظریف" نے بدھ کے روز روسی زبان میں ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے بہت سارے ممالک نے اپنی جغرافیایی سرحدوں کو بند کی ہے لیکن انہوں نے امداد دینے کی سرحدوں کو کھلی رکھی ہے۔

ظریف نے اس بات پر زور دیا کہ امریکی صدر ویسے ہی ایران کیخلاف عائد پابندیوں کو اٹھانے کی عالمی خواست کو نظر انداز کر رہا ہے حالانکہ کرونا وائرس ہمسایہ ممالک میں پھیل سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران معاشی جنگ اور پابندیوں کے بجائے گرین کوریڈور بنانے کی روسی تجوزیر کا خیر مقدم کرتا ہے۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی زویر خارجہ نے گزشتہ روز میں ایک اور ٹوئٹر پیغام میں کہا تھا کہ  اسلامی جمہوریہ ایران انسانی اور قدرتی وسائل سے مالامال ہے؛ ہمیں ڈونلڈ ٹرمپ کی صدقہ و خیرات کی ضرورت نہیں ہے انہیں خود ان ذرائع سے وینٹی لیٹر خریدنا پڑتا ہے جن پر پابندیاں عائد کی ہیں۔

ظریف نے مزید کہا کہ ہمارا صرف مطالبہ یہ ہے کہ وہ ایرانی تیل اور دیگر تیار کردہ مصنوعات کی فروخت، پیدواری کے فروغ اور ملک کی ضروریات کی فراہمی کی راہ میں رکاوٹیں حائل کرنے سے باز رہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =