ایرانی کرونا اینٹی وائرس ماسک اور تشخیصی کٹ جلد ہی مارکیٹ میں آجائیں گی

تہران، ارنا - ایرانی شہید بہشتی میڈیکل سائنس یونیورسٹی کے ڈپٹی برائے تحقیقی امور نے کہا ہے کہ اس یونیورسٹی کے محققین کی جانب سے تشخیصی کٹس ، کرونا اینٹی وائرس ماسک اور لائٹ وینٹی لیٹرز جلد ہی بڑے پیمانے پر تیار اور مارکیٹنگ میں داخل کی جائیں گی۔  

یہ بات "بابک شکری" نے منگل کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ شہید بہشتی یونیورسٹی نے ملک کی موجودہ صورتحال کے مطابق، کورونا وائرس کے خلاف بائیوٹیکنالوجی ، پیداوار اور سازوسامان ، معاشرتی امور ، قانونی ، معاشی، سیاسی امور ، اخلاقیات اور مذہب پر چھ سائنسی اور تحقیقی شعبے تشکیل دی ہے۔
شکری نے مختلف تشخیصی کٹس کی تیاری کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ اس مرض کی تشخیص کے لئے مارکیٹ میں لگنے والی کٹس کو ایک سے کئی گھنٹوں کی ضرورت ہوتی ہے ، لیکن اس یونیورسٹی میں ، 20 منٹ تک اس بیماری کا پتہ لگانے والی کٹس کو تیار کیا گیا ہے اور یہ کٹ نہ صرف کرونا وائرس بلکہ ایڈز اور برڈ فلو سمیت تمام وائرسوں کے لئے استعمال ہوتی ہے۔

ایک ماسک کی تیاری جو کرونا وائرس کو ہلاک کرتی ہے
انہوں نے مزید کہا کہ اس یونیورسٹی کے محققین بھی ملک میں پہلی بار کے لئے ایسے آلات تیار کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں جو کپڑے پر جسمانی اور کیمیائی آپریشنز کرکے انہیں کورونا وائرس سے مزاحم بنائیں گے۔

ہلکی وینٹیلیٹر (مصنوعی سانس لینے والے آلات) کی پیداوار
انہوں نے مزید کہا کہ ہلکی وینٹیلیٹروں (مصنوعی سانس لینے والے آلات) کی تیاری بھی ڈیزائن مرحلے میں ہے اور اگلے مہینے میں ہی پیداوار کے لئے تیار ہوجائے گی۔

کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے اسمارٹ سسٹم
شہید بہشتی یونیورسٹی کے ڈپٹی نے کہا کہ یونیورسٹی کے کمپیوٹر کی ایک ٹیم نے ایک سمارٹ سسٹم تیار کیا ہے جو بیک وقت اور ذہانت سے سی ٹی اسکین ، کھانسی کی آوازیں ، اور اعداد و شمار کا کلیدی تجزیہ کرتا ہے ، اور ڈاکٹر یہ طے کرتا ہے کہ جسم میں کورونا وائرس موجود ہوسکتا ہے۔ 
انہوں نے کہا کہ ہم امید کرتے ہیں کہ یہ سمارٹ سسٹم جلد ہی اسپتالوں اور بیرون ملک بھی دستیاب ہوگا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@


 

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
captcha