1 اپریل، 2020 6:12 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83735600
0 Persons
انسٹیکس سے بائیکاٹ شدہ سامان کی لین دین کرنی ہوگی: روس

ماسکو، ارنا- ویانا کی بین الاقوامی تنظمیوں میں تعینات روسی مندوب نے کہا ہے کہ امریکی پابندیوں میں شامل مصنوعات کو ایران بھجینے کیلئے مخصوص مالیاتی نظام انسٹیکس کا استعمال کرنا ہوگا۔

ان خیالات کا اظہار "میخائیل اولیانوف" نے بدھ کے روز ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ تین یورپی ممالک بشمول فرانس، جرمنی اور برطانیہ نے انسٹیکس میکنزم کے ذریعے ایران کو طبی ساز و سامان کی کامیاب ترسیل کا اعلان کر دیا۔

روسی مندوب نے کہا کہ انسٹیکس میکنزم کا گزشتہ سال کے دوران قیام عمل آیا اور اب اس پر عمل درآمد کیا جا رہا ہے اور یہ خوشی کی بات ہے جس پر مبارکباد دینی ہوگی۔

انہوں نے ایک اور ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ ایران مخالف امریکی پابندیوں کا سلسلہ جاری رکھنے کے پیش نظر امریکی پابندیوں میں شامل مصنوعات کو ایران بھجینے کیلئے مخصوص مالیاتی نظام انسٹیکس کا استعمال کرنا ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ انسٹیکس میکنزم میں یورپی یونین ملکوں کے علاوہ دیگر ممالک کی شمولیت ہونی چاہیے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ جرمن وزارت خارجہ نے ایران کیلئے یورپ کا مخصوص مالیاتی نظام انسٹیکس کے تحت پہلی مالی ٹرانزکشن کی تصدیق کی۔

جرمن وزارت خارجہ کی ویب سائٹ میں جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ برلن، پیرس اورلندن نے ایران کو طبی ساز و سازمان کی ترسیل کیلئے اںسٹیکس میکنزم کے ذریعے پہلی مالی دین دن کو کامیابی سے دے دی۔

بیان میں اس امید کا اظہار کیا گیا ہے کہ انسٹیکس میکنزم اور اس کے ایرانی ہم منصب اس مالیاتی نظام کی توسیع اور مزید مالی لین دین کیلئے باہمی تعاون میں اضافہ کریں گے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ یورپ کے مخصوص مالیاتی نظام کا مقصد جسے انسٹیکس INSTEX میکنزم کا نام دیا گیا ہے، ایران مخالف امریکی پابندیوں کو بائی پاس کرنا ہے، اس کا اہم کام ایران کے ساتھ تجارتی لین دین کی حمایت کرنا ہے.

یورپ کے مخصوص مالیاتی چینل کا مرکزی دفتر پیرس میں ہے اور یہ تجارتی تبادلے کے سازوسامان کا مخفف ہے.

تینوں یورپی ممالک انسٹیکس میکنزم کے حصہ دار ہیں اور ایک نامور جرمن بینکر اس کی قیادت کررہے ہیں.

واضح رہے کہ تین یورپی ممالک بشمول برطانیہ، فرانس، جرمنی نے ایک بیان میں ایران میں کرونا وائرس سے جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کردیتے ہوئے اس صورتحال پر قابو پانے کیلئے ان کی امدادی کھیپیں بھیج دیں۔

 یورپی ممالک کی امدادی کھپیں کرونا وائرس ٹیسٹ کی کٹس، مخصوص دستانے اور حفاظتی کپڑے پر مشتمل تھیں۔

اس کے علاوہ ان تین یورپی ممالک نے عالمی ادارہ صحت اور دیگر بین الاقوامی اداروں کے ذریعے ایران کو 5 ملین یورو مالی امداد بھیج دیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 10 =