جارحوں کے اتحاد کو خیالی پلاؤ پکانے کے بجائے یمنی عوام کی مزاحمت پر توجہ دینی چاہیے: ایران

تہران، ارنا- ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ یمن کیخلاف جارحیت کرنے والوں کے اتحاد کو چاہیے کہ خام خیالی کرنے اور خیالی پلاؤ پکانے کے بجائے حقیقتوں بشمول یمنی عوام کی مزاحمت اور سعودی عرب سے بین الاقوامی برادری کی نفرت پر توجہ دیں۔

ان خیالات کا اظہار سید "عباس موسوی" نے بدھ کے روز یمنی سرزمین کیخلاف جارحیت کرننے والوں کے اتحاد کے ترجمان کے حالیہ بے بنیاد بیانات اور ایران مخالف الزامات کے رد عمل میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ سعودی عرب نے چند ہفتوں کے اندر فتح کے خام خیالی سے یمنی سرزمین کیخلاف جارحیت کا آغاز کیا اور وہ اب پانچ سالوں کیلئے اپنی اس غلطی پر زور دے رہے ہیں حالانکہ ان کے اس اقدام کا نتیجہ یمنی عوام کے قتل عام اور تباہی کے سوا کچھ اور نہیں تھا۔

موسوی نے یمن میں ایرانی ماہرین کی موجوگی کے سعودی دعووں کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ یمن کیخلاف جارحیت کرنے والوں کے اتحاد کو چاہیے کہ خام خیالی کرنے اور خیالی پلاؤ پکانے کے بجائے حقیقتوں بشمول یمنی عوام کی مزاحمت اور سعودی عرب سے بین الاقوامی برادری کی نفرت پر توجہ دیں۔

انہوں نے کہا کہ ان کو جانا چاہیے کہ وہ الزام تراشی اور دوسروں کیخلاف الزام لگانے سے اپنی سیاسی اور فوجی شکستوں کا ازالہ نہیں کرسکتے ہیں۔
انہوں نے ایک بار پھر یمن میں کرونا وائرس کی روک تھام کیلے اقوام متحدہ کے سربراہ کی تجویز پر زور دیا جنہوں نے یمن میں سیز فائر کی تجویز دی تھی۔

موسوی نے یمن کیخلاف جارحیت کرنے والوں سے اسٹاک ہوم معاہدے پر قائم رہنے سمیت یمن میں تباہ کن جنگ اور جنگی جرائم کے خاتمے کا مطالبہ کیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 0 =