29 مارچ، 2020 5:23 PM
Journalist ID: 1917
News Code: 83732197
0 Persons
ظریف کا امریکی پابندیوں کو نظر انداز کرنے پر زور

تہران، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے ایران کیخلاف امریکی کثیر الجہتی جنگ پر تبصرہ کرتے ہوئے امریکی جنگی جرائم میں شریک ہونے اور اس کی غیرقانونی اور غیر اخلاقی پابندیوں کی پیروی کی روک تھام پر زور دیا۔

ان خیالات کا اظہار محمد جواد ظریف نے آج بروز اتوار کو ایک ٹوئٹر پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے موقع پر امریکہ تخریب کاری اور قتل و غارت گری سے آگے نکل کر ایرانیوں کیخلاف معاشی جنگ، معاشی دہشت گردی اور صحت کی دہشتگردی کا آغاز کیا ہے۔

ظریف نے امریکی جنگی جرائم میں شریک ہونے اور اس کی غیرقانونی اور غیر اخلاقی پابندیوں کی پیروی کی روک تھام پر زور دیا۔

انہوں نے اس سے پہلے ایک اور ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ کرونا وائرس نے ایران مخالف امریکی ظالمانہ پابندیوں پر روشنی ڈالی جنہوں نے معاشی دہشتگردی کی آڑ میں ایرانی قوم کی صحت کو نشانہ بنایا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ جب خوراک، ادویات اور دیگر ضروری مصنوعات کی رسائی تک کسی قوم کے حق کو چھین لیا جائے تو وہ دیگر ممالک کے مقابلے میں ایک غیر مساوی اور کمزور پوزیشن میں ہے۔

ظریف نے کہا کہ ہمیں کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے اپنی سوچ کو بدلنی ہوگی؛ اس مقابلے نے ہمیں اپنی حکمرانی کو جدید بنانے کی ضرورت سیکھائی۔
واضح رہے کہ گزشتہ دوسالوں کے دوران ایرانی عوام، امریکہ کیجانب سے لگائی گئی انتہائی ظالمانہ اور انسانی سوز پابندیوں کا شکار ہیں اور امریکی دعووں کے برعکس طبی اور ادویات کی سہولیات کی فراہمی میں ان کو بہت بڑی مشکلات کا سامنا ہے۔

امریکی حکام نے اس بات دعوی کیا ہے کہ طبی اور ادویات کے شعبے میں ایران کیخلاف پابندیاں نہیں لگائی گئی ہیں جبکہ انہوں نے ادویات کی منتقلی کیلئے بہت بڑی رکاوٹیں حائل کی ہیں جس کی وجہ سے ایرانی عوام کو بہت بڑے نقصان پہنچے گئے ہیں۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایرانی وزارت صحت کے مطابق اب تک ملک کے اندر 38 ہزار 309 ہزار افراد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے 2640 افراد کا انتقال ہوگئے ہیں اور 12 ہزار 391 افراد بھی صحت یاب ہوگئے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 1 =