گھر میں رہنا کرونا، وائرس کی جڑ  اکھاڑنے کا بہترین طریقہ

تہران، ارنا – کرونا وائرس کی زنجیر کے توڑنے کا بہترین طریقہ گھر میں رہنا ہے۔

ایرانی عوام نے نیا شمسی سال کا آغاز کر کے موسم بہار کے کا خیرمقدم کیا ہے جبکہ 'کرونا وائرس' کے نام سے ایک بن بلائے مہمان نے دنیا کے 190 سے زائد ممالک کو متاثر کیا ہے جس نے بہت سے لوگوں کوعید نوروز کے رسم و رواج سے محروم کردیا ہے۔

ایرانی عوام عید نوروز کی چھٹیوں میں ایک دیرینہ روایت کی بنا پر اپنے رشتہ داروں سے ملنے جاتے تھے لیکن بہت سے لوگ اس سال میں کرونا وائرس کے پھیلنے کی وجہ سے اور اس مہلک مرض سے جان چھڑانے کے لیے اس روایتی رسم  و رواج کے منانے سے گریز کر کے گھر میں رہے ہیں۔

ان دنوں کے دوران بہت سے ایرانی شہری صحت سے متعلق نکات پر اہمیت دے کر ایک دوسرے کو سوشل میڈیا کے ذریعہ بہار کے موسم اور اور نئے سال کے آغاز پر مبارکباد دی ہے۔

گزشتہ دو ہفتوں کے دوران ارنا نیوز ایجنسی کے ذریعے 'کرونا وائرس کی روک تھام میں میرا حصہ'' کے عنوان سے ایک کمپین کا آغاز کیا گیا ہے جس میں کھلاڑیوں، فنکاروں ، سائنسی ، ثقافتی اور مذہبی شخصیات سمیت متعدد ممتاز شخصیات شامل ہیں جنہوں نے لوگوں کو گھر میں رہنے کی حوصلہ افزائی کی ہے۔

والی بال کے بین الاقوامی ریفری رضا ایران‌زاد نے آج بروز اتوار ارنا کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا کھ تمام کھیلاڑی بالخصوص والی بال کے کیھلاڑی کرونا وائرس کی روک تھام اور اس پر قابو پانے میں اہم کردار ادا کر سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس مرض کی شکست کو ایک قومی عزم بشمول 'گھر میں رہنا' کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وائرس کی شکست ایک عالمگیر کام ہے جس میں تمام لوگ شریک ہیں جس شعبے میں کھیلاڑی ایک ماڈل بن سکتے ہیں۔

 دستکاری مصنوعات کے شعبے میں ہمارے ملک کے بہت سے فنکار، کرونا کو کنٹرول کرنے کے لئے طبی ٹیم کی ضروریات، نرسوں کے کپڑوں اور ماسک کی فراہمی کی مدد کر رہے ہیں۔

ایسے دنوں میں بہت سے ایرانی خاندان گھر میں کرونا کی زنجیر کو کاٹنے کے لیے صحت سے متعلق نکات کو مد نظر رکھتے ہوئے فلم دیکھنا، کتاب پڑھنا جیسے مختلف منصوبوں کے ساتھ گھر میں اپنے اہل خانے کو مصروف کر رہے ہیں۔

بہت سے ایرانی خاندان گھر میں قرنطین کے دوران اپنی صحت کے تحفظ اور کرونا سے بچنے کے لیے کھیل کر رہے ہیں.

ان دنوں میں جو کورونا وائرس پھیل رہا ہے، سپتالوں اور طبی مراکز میں ڈاکٹروں، نرسوں اور عملے اس وائرس کی فرنٹ لائن پر ہیں تو بہتر ہے کہ ہم صحت سے متعلق نکات پر اہمیت دینے اور گھر میں رہنے کے ساتھ طبی ٹیم کی مدد کریں۔

ایرانی وزارت صحت کے مطابق اب تک ملک میں مجموعی طور پر 24811 افراد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے 1934 افراد جاں بحق اور 8931 افراد کا علاج بھی ہوچکے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 10 =