فرانس اور پاکستان کے وزرائے خارجہ کا ایران کیخلاف پابندیاں ختم کرنے پر تبادلہ خیال

اسلام آباد، ارنا – پاکستانی وزیر خارجہ نے اپنے فرانسیسی ہم منصب کے ساتھ ایک ٹیلی فونک رابطے میں کرونا وائرس کیخلاف جنگ میں ایرانی عوام کو درپیش چیلنج اور امریکی اقتصادی پابندیوں کو ختم کرنے کی ضرورت پر تبادلہ خیال کیا۔

شاہ محمود قریشی آج بروز منگل فرانس کے وزیر خارجہ 'جان ایو لودریان' سے ایک ٹیلی فونک رابطہ کرتے ہوئے ایران مخالف پابندیوں کے خاتمے کی ضرورت پر زور دیا۔

قریشی نے کہا کہ موجودہ پابندیوں کی وجہ سے اسلامی جمہوریہ ایران کو کورونا وائرس کے وبا پر موثر انداز میں قابو پانے کی کوششوں میں شدید رکاوٹوں کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

قریشی نے کہا کہ ایران کو امریکی اقتصادی پابندیوں کی وجہ سے کرونا وائرس سے نمٹنے میں بہت سے چیلنجوں کا سامنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران میں کوویڈ 19 کا وسیع پیمانے پر پھیلاؤ بہت تشویشناک ہے اسی لیے اس مرض سے نمٹنے کیلیے ایران کے خلاف پابندیوں کو جلد ہی خاتمہ کیا جانا چاہیے۔

لودریان نے کہا کہ کرونا وائرس ایک عالمی چیلنج ہے تو اس سے نمٹنے کو اجتماعی تعاون کی اشد ضرورت ہے۔

فرانسیسی عہدیدار نے کہا کہ ہم گروپ 20 کے اجلاس میں ایرانی پابندیوں کی منسوخی کا جائزہ لیں گے۔

قابل ذکر ہے کہ قریشی نے حالیہ دنوں میں اپنے ایرانی اور جرمن ہم منصبوں اور جنوبی ایشین علاقائی تعاون (سارک) کے رکن ممالک کے ساتھ کورونا وائرس پھیلاؤ کی تازہ ترین تبدیلیوں کا جائزہ لے کر اس بحران کے خاتمے کے لئے علاقائی باہمی تعاون کی ضرورت پر زور دیا۔

قریشی نے گزشتہ روز یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ "جوزپ بوریل" کے نام سے ایک خط میں کہا کہ ورونا وائرس اب ایک عالمی وبائی مرض ہے جس نے دنیا کے تقریبا تمام ممالک کو متاثر کیا ہے۔

ایرانی وزارت صحت کے مطابق اب تک ملک میں مجموعی طور پر 24811 افراد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے 1934 افراد جاں بحق اور 8931 افراد کا علاج بھی ہوچکے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 2 =