کون سا عقلمند آدمی وائرس پیدا کرنے پر ملزم امریکہ کی مدد قبول کرتا ہے؟: ایرانی سپریم لیڈر

تہران، ارنا – قائد اسلامی انقلاب نے فرمایا ہے کہ کون سا عقلمند شخص کورونا وائرس کے پیدا کرنے والے ملزم امریکہ کی مدد قبول کرتا ہے؟

ان خیالات کا اظہار آیت اللہ العظمی "سید علی خامنہ ای" نے اتوار کے روز عید مبعث کی مناسبت سے ایرانی ٹیلی ویژن پر براہ راست خطاب کرتے ہوئے کہی۔

اس موقع پر انہوں نے امریکی عہدیداروں کے ذریعہ ایران کو طبی امداد کی جھوٹی پیش کشوں کو حیرت انگیز اور عجیب غریب پیش کش قرار دے دیا۔

آیت اللہ خامنہ ای نے امریکی عہدیداروں کو مخاطب قرار دیتے ہوئے فرمایا کہ سب سے پہلے تو خود آپ کو بھی کمی کا سامنا کرنا پڑتا ہے، اگر آپ کے پاس کافی سامان ہے تو ، اسے اپنے لئے استعمال کریں، آپ پر یہ وائرس پیدا کرنے کا الزام ہے۔ ہمارے دشمن ہیں ، لیکن ان میں سب سے خراب امریکہ ہے۔

انہوں نے فرمایا کہ ایران کا دشمن زیادہ ہے مگر امریکی انتظامیہ ہمارے کا بدترین دشمن ہے اور وہ جھوٹے ، بے شرم ، دھوکہ دہی ، غلط بیانی ، چارلیٹنگ ، بے رحمی اور دہشت گرد ہیں۔

رہبر معظم نے اس بات پر زور دیا کہ امریکی حکومت متعدد بار بیان کر چکی ہے کہ وہ کورونا وائرس کے پھیلنے سے نمٹنے کے لئے ایران کو دوائیوں کے ساتھ مدد کرنے کے لئے تیار ہے، یہ عجیب بات ہے پہلے ، اپنے عہدیداروں کے الفاظ پر مبنی ، امریکہ میں ایک قلت کا سامنا ہے۔ لہذا ، جو کچھ اپنے مریضوں کے لئے اسے استعمال کریں۔

انہوں نے فرمایا کہ امریکہ پر کورونا وائرس پیدا کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے ، ہمیں نہیں معلوم کہ یہ دعوی کتنا سچ ہے ، لیکن جب ایسا دعویٰ زیربحث ہے ، تو کیا کوئی عقلمند شخص آپ پر اعتماد کرسکتا ہے؟ آپ ایسی دوائیں دے سکتے ہیں جس سے وائرس پھیلتا ہے یا اسے عام بن سکتا ہے۔ تجربے سے پتہ چلتا ہے کہ امریکہ پر اعتبار نہیں کیا جاسکتا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 13 =