ہم نے شدید پابندیوں کے دوران سب سے بڑے منصوبوں کا افتتاح کیا: صدر روحانی

تہران، ارنا- ایرانی صدر ممکلت نے کہا کہ ایرانی قوم نے 2019ء میں مصیبت کو حماسہ اور حماسہ کو فتح میں تبدیل کردیا اور شدید پابندیوں کے دوران سب سے بڑے منصوبوں کا افتتاح کرنے سے امریکہ کے منہ پر ایک زور دار طمانچہ مارا۔

ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر "حسن روحانی" نے بدھ کے روز کابینہ کے اجلاس کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ دشمن عناصر نے گزشتہ دو سالوں کے دوران ایران کیخلاف سخت سے سخت معاشی پابندیاں عائد کی۔

صدر روحانی نے مزید کہا کہ 2019ء کے مئی مہینے سے ایرانی قوم، معیشت اور تیل کی صنعت کیخلاف زیادہ سے زیادہ دباؤ ڈالا گیا اور اگرچہ ایرانی قوم کو ان دباؤ کی وجہ سے بہت سارے مشکلات کا سامنا ہوا لیکن اس صورتحال، بہت بڑی کامیابیاں کے حصول کا باعث بنی۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی تاریخ میں ہم نے پہلی بار بغیر تیل مصنوعات کی برآمدات کے معیشت کا تجربہ کیا اور 2019ء کے دوران ہم نے بغیر تیل کی آمدنی پر انحصار کے ذریعے ملک کو چلایا ۔

ایرانی صدر نے مزید کہا کہ اسی سال کے دوران ایران میں پہلی بار کیلئے گیس کی روزانہ پیداوار ہزار ملین کیوبک میٹر تک پہنچ گئی اور ہم گیس کی پیداوار کے شعبے میں دنیا کے سب سے ترقی یافتہ ممالک میں شامل ہیں۔

2019ء کے دوران، ایران نے 43 ارب ڈالر کی مالیت پر مصنوعات کی درآمدات کی ہیں اور ساتھ ہی ایرانی برآمدات کی شرح مالیت کے لحاظ سے 41 ارب ڈالر کی ہے۔

صدر روحانی نے کہا کہ رواں سال کے دوران ضروری مصنوعات کی درآمدات میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 19 فیصد کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے اور گزشتہ 11 مہینوں کے دوران ایرانی درآمدات کی شرح مالیت کے لحاظ سے 41 ارب ڈالر کی ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسی عرصے کے دوران ایرانی برآمدات کی شرح بھی مالیت کے لحاظ 41 ارب ڈالر ہے لیکن اس بات کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہماری درآمدات، برآمدات سے زیادہ ہے بلکہ حساب کتاب کرنے کا طریقہ بدل گیا ہے لہذا اگر اس کا حساب بھی پچھلے سال کی طرح کیا جائے تو برآمدات اب بھی درآمد سے زیادہ ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 2 =