صدر روحانی کا اپنے ہم منصبوں سے امریکی پابندیوں کو نظرانداز کرنے کا مطالبہ

تہران، ارنا- ایرانی صدر نے اپنے ہم منصبوں کو لکھے گئے ایک خط میں ان سے مطالبہ کیا کہ وہ کویڈ-19 کی روک تھام میں ایرانی کوششوں کو نقصان پہنچنے کی وجہ سے امریکی پابندیوں کو نظر انداز کریں۔

تفصیلات کے مطابق "محمد جواد ظریف" نے ہفتہ کی رات ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ ڈاکٹر "حسن روحانی" نے اپنے ہم منصبوں کے نام میں ایک خط میں ان کو ایران میں کرونا وائرس کی روک تھام پر امریکی پابندیوں کے بُرے اثرات سے متعلق وضاحتیں پیش کرتے ہوئے ان سے مطالبہ کیا کہ وہ امریکی پابندیوں کو نظرانداز کریں۔

صدر روحانی نے مزید کہا کہ کسی بدمعاش کی خاطر معصوموں کو ہلاک کرنے کی اجازت دینا غیر اخلاقی ہے۔

ایرانی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ وائرس نہ پالیسی جانتے ہیں اور نہ ہی جغرافیہ؛ ہمیں بھی ایسا ہی ہونا چاہیے۔

واضح رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ نے اس سے پہلے اقوام متحدہ کے ڈائریکٹر جنرل "انٹونیو گوترش" کے نام میں ایک خط میں ان سے ایران مخالف امریکی پابندیوں کو نظر انداز کرنے اور ایران کیخلاف لگائی گئی پابندیوں کو ہٹانے کا مطالبہ کیا تھا۔

انہوں نے ایک اور ٹوئٹر پیغام میں کہا تھا کہ ایرانی مرکزی بینک نے کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ سے 5 ارب ڈالر قرض مانگ لیا۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ امریکی وزارت خزانہ نے اس بات کا دعوی کیا ہے کہ وہ ادویات اور طبی سہولیات کے شعبے میں ایران کیخلاف پابندی نہیں لگائی ہے حالانکہ ایرانی محکمہ خارجہ کے ترجمان کے مطابق اس نے عملی طور ادویات اور طبی سازو سامان کی منتقلی کی راہ میں رکاوٹیں حائل کی ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 8 =