ٹرمپ کو خطے میں امریکی فوجیوں کی موجودگی اور طرز عمل کا جائزہ لینا ہوگا: ایران

تہران، ارنا – ایرانی وزارت خارجہ کے ترجمان نے اس بات پر زور دیا ہے کہ ٹرمپ کو خطرناک اقدامات اور الزمات لگانے کے بجائے خطے میں امریکی فوجیوں کی موجودگی اور طرز عمل کا جائزہ لینا ہوگا۔

یہ بات "سید عباس موسوی" نے جمعہ کے روز امریکی صدر کے عراق میں حالیہ حملوں کی ذمہ داری پر بیانات پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے کہا کہ امریکہ عراق میں اپنی غیرقانونی موجودگی اور اس ملک کے کمانڈرز کے قتل پر عراقی عوام کے ردعمل کے نتائج کا ذمہ دار ہے۔
موسوی نے مزید کہا کہ ٹرمپ کو خطرناک اقدامات اور بے بنیاد الزامات کے بجائے ، اس خطے میں اپنی فوج کی موجودگی اور طرز عمل کا بغور جائزہ لینا چاہئے اور اپنے غیر معقول سلوک کو جواز پیش کرنے اور ذمہ داری سے بچنے کے لئے الزام تراشی کے وائرس کے پھیلاؤ سے گریز کرے ۔
تفصیلات کے مطابق، امریکی محکمہ دفاع (پینٹاگون) نے ایک بیان میں تصدیق کی ہے کہ عراقی حزب اللہ ٹھکانوں پر فضائی حملے شمالی بغداد میں التاجی کیمپ پر میزائل حملوں کے جواب میں تھے۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
7 + 0 =