غیر انسانی پابندیوں نے کیمیائی ہتھیاروں کے شکار افراد کے علاج کو متاثر کیا ہے: ایران

تہران، ارنا - کیمیائی ہتھیاروں کی ممانعت کے لئے تنظیم میں ایرانی مستقل نمائندے نے کہا ہے کہ غیر انسانی پابندیوں نے ہمارے ملک میں ادویات کی فراہمی اور کیمیائی ہتھیاروں سے متاثرہ افراد کے علاج پر منفی اثر ڈالا ہے۔

یہ بات "علیرضا کاظمی ابدی" نے بدھ کے روز اس تنظیم کے 93ویں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔

اس موقع پر انہوں نے کہا کہ کیمیائی حملوں سے متاثرہ افراد کے علاج کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔
انہوں نے اس تنظیم کے ڈائریکٹر جنرل کے اقدام کا حوالہ دیتے ہوئے ممبر ممالک سے رسائی ، ادویات اور علاج کی حائل رکاوٹوں کے خاتمے میں حصہ لینے کا مطالبہ کیا۔
کاظمی نے کہا کہ کیمیائی تخفیف اسلحہ کی مکمل ادائیگی کے لئے کیمیائی ہتھیاروں کا خاتمہ اور کنونشن کی عالمگیریت کی ضرورت ہے۔
انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ امریکہ ، کیمیائی ہتھیاروں کے واحد ہولڈر کی حیثیت سے ، کنونشن کے مقاصد کے حصول میں رکاوٹ ہے۔
ایرانی مستقل نمائندے نے کہا کہ امریکہ کیمیائی ہتھیاروں کے کنونشن کے تحت اپنے کیمیائی ہتھیاروں کو ختم کرکے اپنی ذمہ داریاں پوری کریں۔
انہوں نے او پی سی ڈبلیو کے ساتھ شام کے تعاون پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کیمیائی دہشت گردی کے خاتمے تک اس تعاون کو جاری رکھنے پر زور دیا۔
او پی سی ڈبلیو ایگزیکٹو کونسل کے 93 ویں اجلاس کا 10 مارچ کو ہالینڈ کے شہر دی ہیگ میں کا آغاز کیا گیا۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
3 + 1 =