عالمی اداره صحت نے کرونا وائرس کی روک تھام میں ایرانی کوششوں کو سراہا

تہران، ارنا- عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل نے کرونا وائرس کو وبائی بیماری قرار دیتے ہوئے اس کی روک تھام کیلئے اسلامی جمہوریہ ایران، چین، جنوبی کوریا اور اٹلی کی کوششوں کو سراہا۔

ان خیالات کا اظہار "تدروس آدھانوم" نے بدھ کی رات ایک پریس کانفرنس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ لفظ "وبائی مرض" کی حساسیت کی وجہ سے اسے غلط استعمال نہیں کیا جانا چاہیے۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر مینجر نے اس بات پر زور دیا کہ اس تنظیم نے جائزوں کے بعد کرونا وائرس کو وبائی امراض میں شامل کردیا ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اگر حکومتیں، کرونا وائرس کی تشخیص، علاج، قرنطینہ اور کرونا وائرس کا شکار کیسز کا تعاقب کرنے کیلئے موثر اقدامات اٹھائیں اور اپنے عوام کو کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے متحرک کرلیں تو وہ ممالک جن میں ابھی کرونا وائرس کا پھیلاؤ بہت کم ہے وہ  بیماری کے پھیلاؤ کی رفتار کو کم اور اس کو کنٹرول کر سکتی ہیں۔

انہوں نے کرونا وائرس سے نمٹنے کیلئے اسلامی جمہوریہ ایران، اٹلی، چین اور جنوبی کوریا کی کوششوں کو سراہا۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ دنیا میں کرونا وائرس کی وجہ سے رونما ہونے والا بحران، صرف عوامی صحت پر نقصان نہیں پہنچتا ہے بلکہ وہ ایک ایسا بحران ہے جو تمام شعبوں پر بُرے اثرات مرتب کرسکتا ہے لہذا سب کو اس بحران پر قابو پانے اور اسے پست پشت ڈالنے پر تعاون کرنا ہوگا۔

 واضح رہے کہ ایرانی محکمہ صحت کے مطابق اب تک مجموعی طور پر ملک کے اندر 9 ہزار افراد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے 354 افراد جاں بحق اور 2959 افراد بھی صحت یاب ہوگئے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 11 =