ایران میں سینیٹری سامان کی پیداوار تقریبا 8 گنی ہوگئی ہے

تہران، ارنا- نائب ایرانی وزیر صحت نے کہا ہے کہ ملک کے اندر سینیٹری سامان بشمول فیس ماسک اور جراثیم کش مصنوعات کی پیداوار میں 6 سے 8 گنی تک اضافہ ہوگیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "محمدرضا شانہ" نے آج بروز منگل کو حفظان صحت سے متعلق ضروری مصنوعات کی پیداوار کے حوالے سے محکمہ برائے کان کنی، صنعت اور تجارت کے حکام کیساتھ ایک اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آنے والے دنوں میں تمام طبی اداروں اور فارمیسیوں کی ضروریات کے ایک بڑے حصے کی فراہمی ہوگی۔

 شانہ نے مزید کہا کہ رواں ہفتے کے ابتدا سے عوام کی ضروریات کو پورا کرنے سمیت طبی ٹیموں کے درمیان جراثیم کش مصنوعات، ماسک اور طبی لباس کی تقسیم کو ہم آہنگ کرنے کیلئے وزارت صنعت، کان کنی اور تجارت کیساتھ باقاعدہ اجلاسوں کا انعقاد کیا گیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کرونا وائرس سے رونما ہوالے بحران، دوسرے بحرانوں جیسے جیسے ملک میں پیش آنے والے سیلاب اور زلزلے سے مختلف ہے کیونکہ قدرتی آفات میں اس کا اثر کئی صوبوں پر پڑ سکتا ہے جبکہ کرونا وائرس نے پورے ملک اور یہاں تک کہ دنیا کے ایک بڑے حصے کو بھی متاثر کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس وقت ملک میں جو ادویات اور طبی سامان کی ضرورت ہے وہ بیرون ملک سے بھی آسانی سے حاصل نہیں کی جاسکتی۔

نائب ایرانی وزیر صحت نے کہا ہے کہ ملک کے اندر سینیٹری سامان بشمول فیس ماسک اور جراثیم کش مصنوعات کی پیداوار میں 6 سے 8 گنی تک اضافہ ہوگیا ہے۔

واضح رہے کہ ایرانی محکمہ صحت کے مطابق اب تک مجموعی طور پر ملک کے اندر 8042 افراد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے 293 افراد جاں بحق اور 2371 افراد بھی صحت یاب ہوگئے ہیں۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 1 =