ایرانی مندوب نے عالمی جوہری ادارے کے غیر اصولی بدعات سے خبردار کیا

لندن، ارنا- ویانا کی بین الاقوامی تنظیموں میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے آئی اے ای اے کی نئی رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ایران، عالمی توانائی جوہری ادارے میں رونما ہونے والے ایک خطرناک اور غیر اصولی بدعت کو روکنے کی کوشش کر رہا ہے۔

ان خیالات کا اظہار "کاظم غریب آبادی" نے بدھ کے روز صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ افسوس کی بات ہے کہ امریکہ اور ناجائز صہیونی ریاست ایک بار پھرعالمی ایٹمی ایجنسی کیخلاف اپنے آئینی فرائض کی ادائیگی کیلئے دباؤ ڈال کر ایٹمی ایجنسی اور ایران کے درمیان فعال اور تعمیری تعاون کی راہ میں رکاوٹیں حائل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

غریب آبادی نے کہا کہ ایران، بین الاقوامی جوہری توانائی ایجنسی میں رونما ہونے والے ایک خطرناک اور غیر اصولی بدعت کو روکنے کی کوشش کررہا ہے جو جعلی انٹلیجنس خدمات کو تسلیم کرنا چاہتی ہے۔

ایرانی مندوب نے اس بات پر زور دیا کہ صہیونی ریاست سمیت جعلی جاسوسی خدمات کی بنیاد پر  عالمی جوہری ادارے کیجانب سے وضاحت یا اضافی رسائی کیلئے کسی بھی درخواست، ایٹمی ایجنسی کے قوانین سے متصادم ہے اور ایران بھی ان جیسے مطالبات کو پوری کرنے کا کوئی وعدہ نہیں دے سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ  اگر حکومتیں ان جیسی سازشوں کیخلاف بنیادی اقدامات نہ اٹھائیں تو ان کی قومی سالیمت پر نقصان پہنچا جائے گا۔

واضح رہے کہ عالمی جوہری ادارے نے گزشتہ روز جوہری معاہدے کی کارگردگی سے متعلق اپنی تارہ ترین رپورٹ کو شائع کیا جس میں کہا گیا ہے کہ ایران نے تین مقامات تک رسائی کی اجازت نہیں دی اور ایٹمی مواد سے متعلق آئی اے ای اے کے پوچھے گئے سوالات پر خاطر خواہ تعاون نہیں کیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 7 =