ایران کا کورونا وائرس کیخلاف دو دوائیں کے کیلینیکل ٹرائل کا آغاز

تہران، ارنا - اسلامی جمہوریہ ایران نے کورونا وائرس کے خلاف دو دوائیں کے کیلینیکل ٹرائل کا آغاز کردیا۔

یہ بات ایرانی میڈیکل سائنسز یونیورسٹی بقیہ اللہ کے سربراہ ڈاکٹر "علیرضا جلالی" نے بدھ کے روز ارنا نیوز ایجنسی کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہی۔
انہوں نے ان ادویات کی لیبارٹری کی تیاری کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ دوائیں جڑی بوٹیوں اور سپرے کی شکل میں ہیں۔
جلالی نے ادارہ صحت کی جانب سے اس دوائیں کے کیلینیکل ٹرائل کے لئے حاصل ہونے والے لائسنس پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ادویات کورونا بیماری کے حتمی علاج کے لئے نہیں ہیں ، لیکن وہ مریضوں کو بہتر بنانے میں مدد کریں گی۔
انہوں نے مزید کہا کہ توقع کی جارہی ہے کہ اس ادویات کی جانچ پڑتال اور ضروری اجازت حاصل کرنے میں 2 سے 3 مہینوں کے درمیان وقت لگے گا جس کے بعد مارکیٹ میں داخل ہوجائیں گی۔
انہوں نے کہا کہ کورونا ادویات کی تیاری کے لئے تحقیقی منصوبے شروع ہوچکے ہیں اور اس یونیورسٹی کے محققین اس دوائیں کی بڑے پیمانے پر پیداوار کے لئے تین منصوبوں پر کام کر رہے ہیں۔
 ایرانی بقیہ اللہ یونیورسٹی کے سربراہ نے کہا کہ حالیہ مہینوں میں سانس کی بیماریوں جیسے H۱N۱ انفلوئنزا کے علاج کے لئے تین یا چار جڑی بوٹیوں دوائیں تیار کی گئی ہیں اور ہم ان کے ذریعہ کورونا کے شکار بیماروں کی بہتری کے لئے تحقیق پر کام کر رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ مطالعات سے پتہ چلتا ہے کہ یہ دوائیں کورونا پر موثر ہونی چاہئیں مگر  یہ تحقیقی کام کے مختلف مراحل میں ثابت ہونے کی ضرورت ہے اور عالمی ادارہ صحت سے لازمی لائسنس کو حاصل کیا جانا چاہئیے۔
ایرانی محکمہ صحت کے مطابق اب تک ملک کے اندر مجموعی طور پر 2 ہزار 336 افراد کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں جن میں سے 77 افراد جاں بحق ہوگئے ہیں اور 435 افراد کا علاج بھی ہوچکے ہیں۔
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 6 =