عالمی جوہری ادارہ ایران جوہری معاہدے کی کارکردگی کی نگرانی کرتا رہتا ہے

لندن،ارنا- ویانا کی بین الاقوامی تنظیموں میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے مستقل مندوب نے جوہری معاہدے کی کارکردگی سے متعلق عالمی ایٹمی ایجنسی کی تازہ ترین رپورٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ عالمی جوہری توانائی ادارہ، جوہری معاہدے کی نگرانی کرتا رہتا ہے۔

ان خیالالت کا اظہار "کاظم غریب آبادی" نے منگل کے روز صحافیوں کیساتھ گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آئی اے ای اے کی تازہ ترین رپوٹ سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ عالمی توانائی ادارے نے 16 جنوری 2016ء سے اب تک ایران جوہری معاہدے کی شفاف کارکردگی کی نگرانی کا سلسلہ جاری رکھا ہے۔

غریب آبادی نے کہا کہ اس رپوٹ میں مزید آیا ہے کہ ایران کی جوہری تنصیبات فرڈو میں "یو ایف 6" یورینیم کی افزودگی کا عمل جاری ہے اور یورینیم افزودگی کی سطح بھی 5۔4 فیصد تک پہنچ گئی ہے۔

ایرانی مندوب نے کہا کہ آئی اے ای اے کی رپورٹ کے مطابق رواں سال کے 19 فروری تک ایران نے 9۔1020 کلوگرام افزودہ یورینیم کو تیار کیا ہے۔

غریب آبادی نے کہا کہ اس رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے نئے سنٹری فیوجز کا تنصیب بھی کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ رپورٹ میں اس بات پر زور دیا گیا ہے کہ ایران اضافی پروٹوکول کو رضاکارانہ اور عارضی طور پر نافذ کر رہا ہے اور جوہری وعدوں سے متعلق ایران کی شفاف کارکردگی کی نگرانی کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 4 =