ظریف کا کرونا وائرس کی روک تھام میں عالمی ادارہ صحت کی امداد پر شکریہ

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر خارجہ نے امریکی پابندیوں کے باوجود کرونا وائرس کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے عالمی ادارہ صحت سمیت دوست ممالک کی امداد کا شکریہ ادا کیا۔

تفصیلات کے مطابق "محمد جواد ظریف" نے پیر کے روز ایک ٹوئٹر پیغام میں کرونا وائرس کی روک تھام پر ایرانی حکومت اور عوام سے اظہار یکجہتی کیلئے عالمی ادارہ صحت کا شکریہ ادا کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی پابندیوں کے باوجود ایران میں کرونا وائرس کا شکار افراد کی مدد کیلئے عالمی ادارہ صحت اور دوست ممالک کی امداد کا شکرگزار ہیں۔

ظریف نے مزید کہا کہ اب ایران میں کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے ماسک "این 95"، وینٹیلیٹر، سرجیکل گاؤن، کرونا وائرس ٹیسٹ کٹس، پی پی ایف، چہرے اور جسمانی شیلڈز کی ضرورت ہے۔

واضح رہے کہ عالمی ادارہ صحت نے آج بروز پیر کو کرونا وائرس ٹیسٹ کی ایک لاکھ کٹس سمیت دیگر طبی سہولیات پر مشتمل ایک کھیپ کو ایران بھیج دیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کی امدادی کھیپ میں 8 ٹن مختلف قسم کی ادویات بھی موجود ہیں جس کو ایک فوجی ہوائی جہاز کے ذریعے دبئی ایئرپورٹ سے ایران بھیجا گیا ہے۔

عالمی ادارہ صحت کے ایک عہدیدار کے مطابق، امداد کے علاوہ 6 طبی ٹیمیں، لیبارٹری سائنس کے ماہرین اور وبائی امراض کے ماہرین، ایران کو کرونا وائرس کی شناخت اور اس پر قابو پانے میں مدد کرتے ہیں۔

واضح رہے کہ تین یورپی ممالک بشمول برطانیہ، فرانس، جرمنی نے بھی ایک بیان میں ایران میں کرونا وائرس سے جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کردیتے ہوئے کہا کہ اس صورتحال پر قابو پانے کیلئے ان کی امدادی کھیپیں جلد ایران پہنچیں گی۔

اس کے علاوہ ان تین یورپی ممالک نے عالمی ادارہ صحت اور دیگر بین الاقوامی اداروں کے ذریعے ایران کو 5 ملین یورو مالی امداد بھیج دیا ہے۔

برطانیہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ ایران کے سفیر "حمید بعیدی نژاد" نے ایک ٹوئٹر پیغام میں کہا کہ کرونا وائرس کی روک تھام کیلئے تین یورپی ملکوں بشمول برطانیہ، فرانس اور جرمنی کی امدادی کھیپیں آج رات ایران پہنچیں گی۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
1 + 15 =