سوئس مالیاتی میکنزم سے متعلق امریکی چھوٹ پر ایران کا رد عمل

تہران، ارنا- ایرانی مرکزی بینک کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایسا لگتا ہے کہ امریکی حکومت نے بنیادی اجناس اور ادویات کی درآمدات اور فراہمی سے متعلق ایران کے زرمبادلہ وسائل کے کچھ حصے کے استعمال کی چھوٹ دی ہے۔

ان خیالات کا اظہار "عبدالناصر ہمتی" نے پیر کے روز اپنے انسٹاگرم اکاونٹ میں ایک پیغام میں کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ کل میں نے بینک کے ایگزیکٹوز کو مشورہ دیا تھا کہ وہ ان گاہکوں کی مدد کریں جو کرونا وائرس کے پھیلاؤ کی وجہ سے اپنے کاروبار میں دشواری کا سامنا کررہے ہیں۔

ہمتی نے مزید کہا کہ میں جانتا ہوں کہ سفارش کافی نہیں ہے لیکن میں اس مسئلے کی اہمیت کو واضح کرنے کی کوشش کر رہا تھا اور ضروری فیصلوں کو ہدایت نامہ میں بتایا جائے گا۔

انہوں نے ایران کیلئے سوئس مالیاتی مکنیزم سے متعلق بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ سوئٹزلینڈ کے سفیر کے مطابق ایسا لگتا ہے کہ امریکی حکومت نے بنیادی اجناس اور ادویات کی درآمدات اور فراہمی سے متعلق ایران کے زرمبادلہ وسائل کے کچھ حصے کے استعمال کی چھوٹ دی ہے۔

ایرانی مرکزی بینک کے سربراہ نے کہا کہ تاہم اس عمل کو عملی طور پر دیکھنا ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ امریکی حکومت نے اب تک غیر قانونی طور پر دیگر ممالک کیخلاف دباؤ ڈالنے کے ذریعے مرکزی بینک کے مالی ذخائر کو مسدود کیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
4 + 13 =