ایران کا اقوام کے حقوق کیخلاف پابندیوں کی توسیع پر خدشات کا اظہار

تہران، ارنا- اسلامی جمہوریہ کے ادارہ برائے انسانی حقوق کے سربراہ نے قوموں کیخلاف یکطرفہ اقدامات کی تنقید کرتے ہوئے انسانی حقوق اور اقوام کے حقوق کیخلاف لگائی گئی پابندیوں کی توسیع پر اپنے خدشات کا اظہار کردیا۔

ان خیالات کا اظہار "باقری کنی" نے ویانا کے دورے کے موقع پر خاتون پاکستانی وزیر برائے انسانی حقوق "شیرین مزاری" سے ایک ملاقات میں کیا۔

اس ملاقات میں دونوں فریقین نے انسانی حقوق کے شعبے میں باہمی تعاون کو فروغ دینے اور اس حوالے باہمی اور بین الاقوامی صلاحیتوں کو بروئے لانے پر زور دیا۔

اس موقع پر باقری کنی نے اسلامی اصولوں اور اقدار کے مطابق انسانی حقوق کے کانسپٹس کی تیاری پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ایران اور پاکستان کے درمیان عدالتی تعاون کو فروغ دینا ہوگا۔

انہوں نے بعض مغربی ممالک کیجانب سے اسلام فوبیا کے پھیلاؤ کی منصوبہ بندیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ بعض ممالک انسانی حقوق کی صلاحیتوں کا غلط فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

انہوں نے ان جیسے خصمانہ اقدمات کیخلاف مقابلہ کرنے کیلئے ایران اور پاکستان کے درمیان باضابطہ اور کثیر الجہتی مذاکرات کی ضرورت پر زور دیا۔

باقری کنی نے غیر وابستہ ممالک کی تحریک کے فریم ورک کے اندر باہمی تعاون کے فروغ کا مطالبہ کیا۔

 اس موقع پر پاکستانی وزیر برائے انسانی حقوق نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ پر اپنے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے اس وائرس کی روک تھام کیلئے باہمی تعاون کی ضرورت پر زوردیا۔

انہوں نے عدالتی اور قانونی شعبوں میں ایران اور پاکستان کے درمیان تعلقات کی تقویت پر زور دیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 10 =