شازند پیٹروکیمیکل فیکٹری سے 20 کروڑ ڈالر کی برآمدات کی توقع

اراک، ارنا-  اسلامی جمہوریہ ایران کے صوبے مرکزی کے گورنر جنرل نے کہا ہے توقع کی جاتی ہے کہ رواں سال کے دوران اس صوبے میں واقع شازنذ پیٹروکیمیکل فیکٹری سے مختلف ممالک کو 20 کروڑ ڈالر پر مشتمل مصنوعات کی برآمدات ہوجائیں گی۔

 ان خیالات کا اظہار سید "علی آقازادہ" نے آج بروز پیر کو شازند پیٹرو کیمیکل فیکٹری میں ہائیڈرو کاربن بھاپ ری سائیکلنگ یونٹ کی افتتاحی تقریب کے موقع پر کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پابندیوں کے باوجود صوبے مرکزی کے صنعتی شعبوں میں پیداواری عمل میں اضافہ ہوتا جار رہا ہے اور صوبے بھر کے ادارے ملکی پیداوار کے حامی ہیں۔

آقا زادہ نے کہا کہ شازند پیٹرو کیمیکل فیکٹری میں ہائیڈرو کاربن بھاپ ری سائیکلنگ کے قیام کو پیٹروکیمکیل صنعت کو اور ماحول دوست بنانے میں ایک موثر اقدام قرار دے دیا۔

 یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایران میں اسلامی انقلاب کے بعد پیٹروکیمیکل مصنوعات کی پیداوار میں 22 گنا اضافے کے ساتھ رواں سال کے اختتام پر 660 لاکھ ٹن کے قریب تک پہنچ جائے گی۔

رپورٹ کے مطابق ایران میں انقلاب سے پہلے پیٹرو کیمیکل مصنوعات کی پیداوار 30 لاکھ ٹن تھی جس میں 22 گنا اضافے کے ساتھ رواں سال کے اختتام پر 660 لاکھ ٹن کے قریب پہنچ جائے گی۔

ایران دنیا کے چند ممالک میں سے ہے جس کے پاس، منافع بخش اور فعال پیٹروکیمیل صعنت کے لئے وسائل اور صلاحیتوں سمیت تمام ضروی سامان موجود ہیں۔

اصل میں، ایرانی پیٹروکیمیکل صنعت میں منفرد فوائد ہیں اور بعض ماہرین نے ایران کو پیٹرو کیمیکل صنعت کے مستقبل جنت کا نام دیا ہے.

گیس کے بہت بڑے ذخائر،خوارک کی فراوانی، جنوبی ساحلوں پر پانی کے وسائل تک رسائی اور سمندری راستوں کے قریب تعینات، ایران کے فوائد میں سے ایک ہے جس کو پیٹرو کیمیکل صنعت کے سرمایہ کاروں کے لئے ایک پر کشش مقام میں تبدیل کر دیا ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 11 =