ایران اور عراق کا شہید سلیمانی کے قتل کا مقدمہ چلانے کیلیے تعاون

تہران، ارنا – ایرانی اور عراقی حکام نے ایک ملاقات کے دوران شہید جنرل سلیمانی کے قتل کے مقدمہ چلانے کے طریقوں پر بات چیت کی.

ایرانی عدلیہ کے نائب برائے بین الاقوامی امور اور انسانی حقوق 'علی باقری کنی' نے عراقی وفد کے ساتھ ایک ملاقات میں کہا کہ ایران اپنی اندرونی قوانین کے مطابق اس امریکی جرم کا جائزہ کر رہا ہے اور اس کے علاوہ سنجیدہ طور پر قدس فورس کے کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل میں ملوث عناصر کو سزا دینے کے لیے بین الاقوامی تمام قانونی اور عدالتی قابلیتوں کو بروئے کار لائے گا.

اس موقع میں عراقی وزارت انصاف کے ڈائریکٹر جنرل برائے ہیومن رائٹس اور بین الاقوامی تعلقات احمد ترکی عباس نے کہا کہ ٹرمپ کا یہ اقدام ریاستی اور عملی دہشت گردی کی مثال ہے، قانون سے باہر یہ اقدام، دہشتگردی ہے.

انہون نے کہا کہ جب ایک حکومت براہ راست دہشتگردی اقدام کرتی ہے تو وہ بین الاقوامی میدان میں تمام ممالک کے لئے خطرناک ہے۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
9 + 8 =