یورپ کا صحیح راستہ جوہری معاہدے کے وعدوں پر عملدرآمد کرنا ہے: ظریف

تہران، ارنا – ایرانی وزیر خارجہ نے یورپ کی جوہری معاہدے کے وعدوں پر عملدرآمد کرنے کی واپسی کو مسائل کے حل کا واحد طریقہ قرار دے دیا.

یہ بات "محمدجواد ظریف" نے گزشتہ روز میونیخ امن کانفرنس کے موقع پر اپنے فرانسیسی ہم منصب "ژان ایف لودریان" کے ساتھ ایک ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کہی.
انہوں نے یورپ کے جوہری وعدوں پر قائم نہ رہنے کا حوالہ دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ یورپ کا موقف مسائل کے حل میں مدد نہیں کرے گا اور وعدوں پر عملدرآمد کرنا واحد طریقے حل ہے.
ظریف نے کہا کہ اگر یورپ اپنے وعدوں کے مطابق عمل کرے تو اسلامی جمہوریہ ایران اپنے جوہری وعدوں کی کمی سے واپس آئے گا.
انہوں نے مزید کہا کہ ایران فیصلہ کرے گا کہ جوہری وعدوں پر یورپ کے اقدامات ہماری واپسی کے لئے کافی ہیں یا نہیں۔
ایرانی وزیر خارجہ نے کہا کہ اگر یورپ ہمارے ملک کے اقتصادی مفادات کو فراہم کرے تہران بھی 2015 میں طی پانے والے جوہری وعدوں پر واپس آئے گا.
انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران یورپ کے اقدامات کے تحت جوہری معاہدے پر اپنے اقدامات کو "آہستہ" یا "الٹا" کرے گا.
فریقین نے دو طرفہ مسائل، علاقائی تازہ ترین تبدیلیاں اور جوہری معاہدے پر تبادلہ خیال کیا.
یاد رہے کہ ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے جمعہ اور ہفتہ کے روز میونیخ امن کانفرنس کے موقع پر مختلف ممالک کے وزرائے خارجہ اور سربراہوں کے ساتـھ الگ الگ ملاقاتیں کی.
56 ویں سیکورٹی کانفرنس 14 سے 16 فروری تک میونخ میں منعقد ہوئی جس میں 35 ممالک کے سربراہوں نے حصہ لیا.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
2 + 10 =