ترکی اور شام کے حالیہ اختلافات کے حل میں مدد پر تیار ہیں: ایران

نیویارک، ارنا- اقوام متحدہ میں تعینات اسلامی جمہوریہ کے مستقل مندوب نے دہشتگردی کیخلاف جنگ کا سلسلہ رکھنے پر زور دیتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا کہ ان کا ملک علاقے ادلب سے متعلق ترکی اور شام کے درمیان حالیہ اختلافات کے حل میں مدد پر تیار ہے۔

ان خیالات کا اظہار "مجید تخت روانچی" نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں علاقے ادلب سے متعلق منعقدہ اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ادلب علاقے کی نازک صورتحال ہے اور ہمیں بحران کو کنٹرول کرنے کوشش کرنی چاہیے۔

تخت روانچی نے دہشتگردوں کیخلاف جنگ کا سلسلہ جاری رکھنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اسی اقدام کے ساتھ ساتھ سویلین کی زندگی کا تحفظ کرنا چاہیے جو آستانہ امن عمل میں بھی بدستور اس پر زور دیا گیا ہے۔

انہوں نے علاقے ادلب سے متعلق سوچی معاہدے کے نفاذ کا مطالبہ کیا جو آستانہ امن عمل میں بھی اس کی اہمیت پر زور دیا گیا تھا۔

ایرانی مندوب نے ادلب بحران کو سیاسی طریقوں سے حل کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دہشتگرد عناصر کو اس حساس صورتحال سے غلط فائدہ اٹھا کر اپنی پوزیشن کو مضبوط بنانے اور ادلب کو اپنے آپ کے ٹھکانے میں تبدیل کرنے، عام نہتے شہریوں کو مزید مار ڈالنے اور انہیں اغوا کرنے کی اجازت نہیں دینی چاہیے۔

انہوں نے ترکی اور شام کے درمیان مسائل کے حل کیلئے آمادگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آستانہ امن عمل کا اجلاس قریب مستقبل میں دارالحکومت تہران کی میزبانی میں منعقد ہوگا اور یہ اجلاس شام کی صورتحال کے جامع جائزہ کیلئے ایک اچھا موقع ہے۔

انہوں نے ایک بار پھر ادلب بحران کو سیاسی طریقوں سے حل کرنے پر زور دیتے ہوئے شام کی قومی سالیمت، خودمختاری اور سیاسی آزادی کے احترام کی ضرورت پر زور دیا۔

ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
5 + 0 =