امریکہ میں ایرانی شہریوں سے غیرقانونی سلوک کیخلاف قانونی چارہ جوئی کریں گے: ترجمان

تہران، ارنا - ترجمان ایرانی دفترخارجہ نے امریکہ میں ایرانی شہریوں سے سرحدی اہلکاروں کے غیرانسانی سلوک کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے واقعات انسانی حقوق کے خلاف ہیں اور ہم اس پر قانونی چارہ جوئی کریں گے.

سید عباس موسوی نے آج بروز ہفتہ ایرانی شہریوں کےخلاف امریکی حکومت کے حالیہ غیر قانونی سلوک کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایسے امتیازی سلوک بین الاقوامی حقوق کے اصولوں کے منافی ہیں اور امریکہ ان اقدامات کے نتائج کا ذمہ دار ہے.
انہوں نے کہا کہ امریکی بارڈر گارڈز اور سیکیورٹی فورسز کی جانب سے سیاسی عقائد کے بارے میں ایرانی شہریوں سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے اور جبر سے ان افراد کے اکاؤنٹس کو چیک کر رہے ہے اور یہ انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے.
قابل ذکر ہے کہ امریکی کسٹم ادارے کے عہدیداروں نے گزشتہ روز 20 جنوری کو بوسٹن کے بین الاقوامی ہوائی اڈے میں ایک 24 سالہ ایرانی طالب علم کے قانونی ویزے کو منسوخ کر کے اس کو گرفتار کیا.
اس مسئلے کے بعد امیگریشن حقوق کے حامیوں نے گزشتہ روز اس ہوائی اڈے میں امریکی حکام کے اس اقدام کے خلاف احتجاجی اجتماع کیا.
امریکی ڈیموکریٹک رہنما اور صدارتی امیدوار خاتون الزبتھ وارن نے ایک ایرانی طالب علم کو ملک بدر کرنے کے روکنے کا مطالبہ کیا.
ہمیں اس ٹوئٹر لینک پر فالو کیجئے. IrnaUrdu@

آپ کا تبصرہ

You are replying to: .
6 + 9 =